آدتیہ ناتھ نے بی جے پی کارکنوں کو نشانہ بنانے کے خلاف مارچ میں حصہ لیا

Oct 04, 2017 05:23 PM IST | Updated on: Oct 04, 2017 05:23 PM IST

کیچاری۔ اتر پردیش کے وزیراعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے آج مارچ میں حصہ لیتے ہوئے مبینہ طورپر سی پی آئی ایم کی جانب سے بی جے پی کارکنوں کو نشانہ بنانے پر تشویش کا اظہار کیا۔یوگی نے کہا کہ جمہوریت میں تشدد کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔ آدتیہ ناتھ نے کیرل بی جے پی یونٹ کے صدر کوم مانم راج شیکھرن کے ساتھ مل کر 7کیلو میٹرتک مارچ میں حصہ لیا۔ چیف منسٹراترپردیش نے پی ٹی آئی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ جمہوریت میں سیاسی تشددکی کوئی گنجائش نہیں ہے۔  زمین پر سیاست دانوں کی تائید سے تشدد برپا کیاجارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس یاترا کے ذریعہ سی پی آئی ایم کی غلط حکمرانی سے متعلق عوام میں شعور بیدارکررہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس مہم کی حمایت میں عوام بڑے پیمانہ پر نکل آئے ہیں۔

بی جے پی صدر امیت شاہ نے منگل کو وزیراعلی کیرل پنارائی وجین کے آبائی ضلع کنور سے ’جن رکھشا یاترا ‘کاآغاز کیا۔ یہ یاترا 17اکتوبر کو ترواننتا پورم میں اختتام سے قبل ریاست کے مختلف علاقوں سے گذرے گی۔ اس یاترا کا موضوع ’’ تمام افراد کو جہادی۔سرخ دہشت کے خلاف ہوں‘‘ رکھا گیا ہے۔ اس یاترا میں کئی مرکزی وزراء بھی حصہ لیں گے۔ امیت شاہ جوکیرل میں تین روزہ دورہ کررہے ہیں‘ کنورمیں جمعرات کو اس ریلی سے خطاب کریں گے۔

آدتیہ ناتھ نے بی جے پی کارکنوں کو نشانہ بنانے کے خلاف مارچ میں حصہ لیا

آدتیہ ناتھ نے کیرل بی جے پی یونٹ کے صدر کوم مانم راج شیکھرن کے ساتھ مل کر 7کیلو میٹرتک مارچ میں حصہ لیا۔

بی جے پی صدر نے اعلان کیا کہ سی پی آئی ایم کی بی جے پی پارٹی کارکنوں پر مبینہ طورپر تشدد کرنے کے خلاف تمام ریاستوں کے دارالحکومتوں میں پدیاترا منعقد کی جائے گی۔ امیت شاہ نے وجین سے تشدد سے متعلق استفسار کرتے ہوئے کہاکہ 2001ء سے ریاست میں 120بی جے پی کارکنوں کاقتل کیا گیا جب کہ ضلع کنورمیں ہی 84بی جے پی کارکنوں کاقتل ہوا ہے۔ جب کہ گزشتہ سال وزیراعلی کے آبادئی ٹاؤن میں 14بی جے پی کارکنوں کا قتل کیا گیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز