جنوبی كوريا شمالی کوریا کے کسی بھی قسم کے حملے سے نمٹنے کے لئے تیار

Aug 10, 2017 04:10 PM IST | Updated on: Aug 10, 2017 04:10 PM IST

سیول۔  جنوبی کوریا کی فوج نے شمالی کوریا کے اس بیان کو امریکہ-جنوبی کوریا تعلقات کے لئے ایک چیلنج بتایا ہے جس میں اس نے امریکی بحر الکاہل کے علاقے میں واقع گوام پر میزائل سے حملے کرنے کے منصوبے پر کام کرنے کی بات کہی ہے۔ فوج کے سربراہ کے ترجمان روہ جے چون نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ جنوبی کوریا کسی بھی قسم کے چیلنج سے نمٹنے کے لئے تیار ہے۔ فوج نے اگرچہ ابھی تک شمالی کوریا میں کسی بھی قسم کی اشتعال انگیز یا مشکوک سرگرمی نظر آنے سے انکار کیا ہے۔

اس سے پہلے شمالی کوریا نے کل کہا کہ وہ انتظامی طور پر امریکہ کے تابع بحر الکاہل کے مغربی حصے میں واقع گوام جزیرے پر میزائل سے حملے کے منصوبے پر غور کر رہا ہے۔ شمالی کوریا کا یہ بیان امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے اس بیان کے بعد آيا ہے جس میں مسٹر ٹرمپ نے کہا تھا کہ شمالی کوریا اگر امریکہ کو دھمکی دینا جاری رکھتا ہے تو اسے ایسی تباہی کا سامنا کرنا ہوگا جو دنیا نے کبھی نہیں دیکھی ہوگی۔

جنوبی كوريا شمالی کوریا کے کسی بھی قسم کے حملے سے نمٹنے کے لئے تیار

گوام کی آبادی تقریبا 163،000 لوگوں کی ہے اور وہاں ایک امریکی فوجی اڈہ بھی ہے جس میں ایک سب میرین اسکواڈرن، ایک ہوائی اڈہ اور ایک کوسٹ گارڈ گروپ شامل ہے۔ امریکہ اور شمالی کوریا کے درمیان تیزی سے بڑھنے والی کشیدگی کا مالیاتی منڈیوں پر بھی منفی اثر پڑا ہے۔ امریکی حکام اور تجزیہ کاروں نے خبردار کیا ہے کہ ملک شمالی کوریا کے ساتھ بیان بازی کے جھگڑوں میں شامل نہ ہو۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز