ملک کی تین چوتھائی سے زائد خواتین سینیٹری نیپکن سے کوسوں دور

نئی دہلی: جدیدیت اور معلومات کے تمام متبادلوں کے باوجودملک کی تین چھوتھائی سےزائدتقریبا 82 فیصد خواتین سینیٹری نپکن کااستعمال نہیں کرتیں اور آج بھی حیض کے دوران پرانے طریقوں کو اپناتی ہیں۔

May 26, 2018 01:16 PM IST | Updated on: May 26, 2018 01:17 PM IST

نئی دہلی: جدیدیت اور معلومات کے تمام متبادلوں کے باوجودملک کی تین چھوتھائی سےزائدتقریبا 82 فیصد خواتین سینیٹری نپکن کااستعمال نہیں کرتیں اور آج بھی حیض کے دوران پرانے طریقوں کو اپناتی ہیں۔ دلچسپی بات یہ ہےکہ سینیٹری نیپکن کا استعمال کرنےوالی بقیہ خواتین بھی مصنوعات کے مناسب استعمال سے آگاہ نہیں ہیں۔ دونوں ہی حقائق کےبارےغورکیاجائےتواس کا بنیادی سبب یہ ہے کہ ان میں سے اکثر خواتین اس سلسلے میں کسی سے بات نہیں کرنا چاہتی ہیں اور غیر محفوظ متبادل کو اپنانے کے لئے مجبور ہوتی ہیں۔ اس کانتیجہ ان کے پیشاب اورمادۂ تولیدوالے حصے میں انفیکشن کے علاوہ دماغی کشیدگی اور تشویش کی شکل میں سامنے آتی ہے۔

ملک کی تین چوتھائی سے زائد خواتین سینیٹری نیپکن سے کوسوں دور

علامتی تصویر

آئندہ28مئی کو ماہانہ حفظان صحت یوم صفائی کے موقع پر پہلی ماہانہ بیداری کانفرنس کے دوران دہلی میں آئندہ اہم پانچ سالہ منصوبہ نائن مومنٹ کا آغاز کیا جائے گا۔اس مومنٹ کی حمایت مشہور فلم اداکار اکشے کمار نے بھی کیا۔ اکشے کمار کی حال ہی میں اعزازیافتہ فلم 'پیڈمین' میں بھی ایام حیض کی غلط فہمیوں اور مسائل پر روشنی ڈالی گئی۔کانفرنس میں مشہورومعروف فلمی شخصیات، تعلیمی اداروں، این جی اوز، سماجی کارکنان اور متفکرین شرکت کریں گے۔ کانفرنس کے شرکاء ماہانہ ایام حیض سے منسلک غلط فہمیوں پر تبادلہ خیال کریں گے۔ جس کی وجہ صدیوں سے لڑکیوں اور عورتوں کو ان کی صلاحیت کے مناسب استعمال اورایام حیض کےدوران باوقارزندگی گذارنے سے دور رکھا جاتا ہے۔

نائن مومنٹ کے بانی امر تلسیان کہتے ہیں کہ ماہانہ ایام حیض اور حفظان صحت

کےسلسلےمیں سنجیدگي وشعورایک اہم مسئلہ ہے۔ملک میں خواتین کی ایک بڑی تعدادان خواتین کی ہےجوایام کےدوران محفوظ اور حفظان صحت کی مصنوعات کا استعمال نہیں کرتیں۔ انہوں نے کہا کہ’مجھے امید ہے کہ ہم ہرشخص کو نائن موومنٹ کےساتھ شامل ہونے کے لئےان کی حوصلہ افزائی کریں گے۔مجھے یقین ہے کہ ہم سب ایک ساتھ اس سمت میں ایک بڑی تبدیلی لا سکتے ہیں۔ کھلے طور پر اس پر بحث کرنے اور لوگوں کو تعلیم یافتہ بناکر ایام حیض سےمتعلق تصور میں تبدیلی لانےکےساتھ ہی پابندیوںپرروک لگاسکتےہیں۔

انہوں نے کہا کہ ’نائن مومنٹ کا مقصد لڑکیوں اور عورتوں کوایام حیض کے دوران حفظان صحت کی مصنوعات کے استعمال کو فروغ دینے کے بارے میں تبادلہ خیال کرنے اور بحث کو فروغ دینےکےلئےحوصلہ افزائی کرناچاہیےتاکہ اس سلسلےمیںایک کھلا ماحول پیداہو۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز