ملالہ یوسف زئی پر حملہ کرنے والا طالبان دہشت گرد پولیس کے ہاتھوں ہلاک

Sep 04, 2017 07:22 PM IST | Updated on: Sep 04, 2017 07:22 PM IST

کراچی: کراچی پولیس نے آج دعویٰ کیا ہے کہ اس نے تحریک طالبان پاکستان سے منسلک چار جنگجووں کوموت کے گھاٹ اتار دیا ۔ ان میں سے ایک نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی پر ہوئے حملہ میں ملوث تھا۔ دی نیوز انٹرنیشنل میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق ایس ایس پی مالیر راؤ انور نے دعویٰ کیا کہ خورشیدنامی دہشت گرد ٹی ٹی پی سربراہ ملا فضل اللہ کا کزن تھا اور ملالہ اور پاکستانی فوج کے افسروں پر حملوں میں ملوث تھا۔ قائدآباد پولیس اسٹیشن پر بم حملہ میں بھی اس کا ہاتھ تھا۔

راؤ نے بتایا کہ کوئٹہ کے قریب ہوئے تصادم میں مارے گئےدہشت گرد ٹی ٹی پی کے سوات دھڑے سے تعلق رکھتے تھے۔ انسانی حقوق بالخصوص سوات میں خواتین کی تعلیم کے لئے سرگرم ملالہ یوسف زئی نواکتوبر 2012 کو اسکول سے آتے ہوئے طالبان حملہ آوروں کی فائرنگ میں زخمی ہوگئی تھیں۔

ملالہ یوسف زئی پر حملہ کرنے والا طالبان دہشت گرد پولیس کے ہاتھوں ہلاک

بیس سالہ ملالہ اس وقت شہ سرخیوں میں آئی تھی جب 2012 میں ایک مسلح طالبان نے اس کے سر میں گولی مار دی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز