بارسلونا میں ایک اور دہشت گردانہ حملہ، 13 افراد کی موت، داعش نے لی حملے کی ذمہ داری

Aug 18, 2017 08:51 AM IST | Updated on: Aug 18, 2017 09:18 AM IST

میڈرڈ۔ وسطی بارسلونا کے لاس رامبلاس ایونیو کے پاس راہگیروں کی بھیڑ پر ایک وین کے چڑھ جانے سے 13 افراد کی موت ہو گئی۔ پولیس نے اسے دہشت گردانہ حملہ قرار دیا ہے۔

ہسپانوی میڈیا كیڈینا سیر ریڈیو نے پولیس ذرائع کے حوالے سے مرنے والوں کی تعداد بتائی ہے۔ تاہم پولیس نے واقعہ میں کچھ اور لوگوں کے مارے جانے اور زخمی ہونے کی بات کہی ہے لیکن ہلاکتوں کی تصدیق نہیں کی ہے۔ پولیس وین ڈرائیور کی تلاش میں مصروف ہے۔

بارسلونا میں ایک اور دہشت گردانہ حملہ، 13 افراد کی موت، داعش نے لی حملے کی ذمہ داری

بارسلونا میں حملے کے بعد جانچ کرتی پولیس

دوسری طرف ایل پیروڈیكو اخبار نے کہا کہ واقعہ کے بعد دو مسلح لوگ بارسلونا شہر کے مرکز کے ایک بار میں گھس گئے اور فائرنگ کی۔ اگرچہ اخبار نے ذرائع کے نام ظاہر نہیں کئے ہیں۔

یہ بھی واضح نہیں ہو پایا کہ دونوں واقعات میں کوئی تعلق بھی تھا یا نہیں۔ امریکی حکومت کے ایک قریبی ذرائع کے مطابق اس واقعہ کے پیچھے دہشت گردوں کا ہاتھ ہونے کا اندیشہ ہے۔ وائٹ ہاؤس کے ترجمان نے کہا کہ صدر ڈونالڈ ٹرمپ صورت حال پر مسلسل نظر رکھے ہوئے ہیں۔

دریں اثنا، خوفناک دہشت گرد تنظیم اسلامک اسٹیٹ ( داعش) نے اسپین کے بارسلونا میں حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ داعش کی نیوز ایجنسی اعماق کے مطابق اسلامک اسٹیٹ کے جنگجوؤں نے بارسلونا میں حملہ کیا ہے۔ اس حملے کا مقصد اتحادی افواج کے ممالک کو نشانہ بنانا تھا۔ تاہم، اس گروپ نے اپنے دعوی کی تصدیق کے لئے کوئی ثبوت نہیں پیش کیا ہے۔ بارسلونا کے وسط میں واقع مشہور سیاحتی ریزورٹ میں گاڑی سے بھیڑ پر حملہ کیا گیا تھا۔ پولس کا کہنا ہے کہ اس معاملے میں دو افراد کو گرفتار کیا گیا ہے، جن میں ایک مراکشی اور ایک ہسپانوی شہری بھی شامل ہے۔ اس حملے میں کم از کم 13 افراد ہلاک ہو چکے ہیں اور سو سے زائد افراد زخمی ہوئے ہیں۔ پولیس نے کہا کہ ابھی یہ واضح نہیں ہے کہ اس حملے میں کتنے افراد ملوث ہیں۔

پولیس نے بتایا کہ شہر کے مضافات میں پولیس کے ساتھ مڈبھیڑ میں ایک اور مشتبہ شخص ہلاک ہو گیا ہے۔ دریں اثناء، وزیر اعظم ماریانو روجی نے تین روزہ قومی سوگ کا اعلان کیا اور اسے دہشت گردانہ حملہ قرار دیا۔ فرانسیسی صدر ایمنوئل میکرون نے ٹویٹ کیا کہ "بارسلونا کے متاثرین کے ساتھ میری تعزیت"۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز