فلپائن میں فوج نے دہشت گردوں کے خلاف کارروائی تیز کی

Jun 20, 2017 04:37 PM IST | Updated on: Jun 20, 2017 04:37 PM IST

ماراوي سٹی، فلپائن۔  فلپائن کے جنوبی ماراوي سٹی میں پھنسے ہوئے دہشت گردوں کے خلاف زوردار کارروائی کرتے ہوئے فوج کے طیاروں نے ان کےٹھکانوں پر زوردار بمباری شروع کر دی ہے اور فوجیوں نے انہیں چاروں طرف سے گھیر کر ان کی مدد کے سارے راستے بند کر دیئے ہیں۔ فوج کے ترجمان نے یہ اطلاع دی ہے۔ فوج کو اس بات کا خدشہ ہے کہ رمضان المبارک کے اختتام کے بعد مقدس تہوار عید الفطر کے بعد ان دہشت گردوں کی مدد کے لئے مزید دہشت گرد آ سکتے ہیں اس لئے فوج اپنی مہم کو عید سے قبل ہی مکمل کر لینا چاہتی ہے۔

اس مقام پرفوج اور دہشت گردوں کے درمیان جاری لڑائی کا پانچواں ہفتہ ہو چکا ہے اور اس میں تقریبا 350 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔ یہاں سے اپنے گھروں کو چھوڑ کر جا رہے مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ طیاروں کی بمباری اور دونوں طرف سے کی جا رہی فائرنگ میں منہدم مکانوں میں انہوں نے متعدد لاشیں دیکھی ہیں۔ فوجی ترجمان اور بریگیڈیر جنرل ریستتتو پاڈیلا نے بتایا کہ فوج اور پولیس کے اعلی افسران کی میٹنگ میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ اس لڑائی کو عید سے پہلے ہی ختم کر لیا جائے تاکہ عید کے بعد ان دہشت گردوں کی مدد کے لئے کہیں اور سے مدد نہیں پہنچ سکے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں خود پتہ نہیں ہے کہ یہ لڑائی کب تک چلے گی کیونکہ فوجیوں کو ہر گھر میں جا کر دہشت گردوں کے خلاف لڑنا پڑ رہا ہے اور چاروں طرف بارودی سرنگیں بھی بچھی ہوئی ہیں جو ہمارے فوجیوں کے لئے ایک خطرہ بن کر سامنے آ ئی ہے۔

فلپائن میں فوج نے دہشت گردوں کے خلاف کارروائی تیز کی

انہوں نے بتایا کہ فوج اس بات پر قریبی نظر رکھ رہی ہے کہ انہیں کہیں کسی دوسری طرف سے مدد نہیں ملنے پائے۔ اس دوران کچھ مقامی شہریوں کا کہنا ہے کہ اس بات کا مکمل امکان ہے کہ رمضان المبارک کے ختم ہونے کے بعد لڑائی مزید تیز ہو سکتی ہے۔ فوج کے اعداد وشمار کے مطابق کل تک طرفین کی فائرنگ میں 257 دہشت گرد، 62 فوجی اور 26 شہریوں کی موت ہو گئی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز