عراق میں خود کش بم دھماکے میں مہلوکین کی تعداد بڑھ کر 35 ہوئی

May 31, 2017 01:29 PM IST | Updated on: May 31, 2017 01:29 PM IST

بغداد۔ عراق کے دارالحکومت بغداد میں دو کار اور ایک خود کش بم دھماکے میں کم از کم 35 لوگوں کی موت ہو گئی ہے اور 100 سے زیادہ افراد زخمی ہوئے ہیں۔ رمضان المبارک کے مقدس مہینے میں دیر رات بھیڑ کو نشانہ بنا کر کیے گئے تینوں حملے کی ذمہ داری کل دہشت گرد تنظیم اسلامک اسٹیٹ (آئی ایس) نے اپنی نیوز ایجنسی عماق کے ذریعے لی تھی۔ بغداد کے كرراڈا ضلع میں کل آدھی رات کو ایک آئیسکریم پارلر کے قریب ایک کار بم دھماکے میں کم از کم 13 افراد ہلاک اور 40 دیگر زخمی ہو گئے۔ وہیں کچھ دیر بعد کرخ ضلع میں ایک سرکاری دفتر کے قریب ہوئے دوسرے بم دھماکے میں کم از کم 10 افراد ہلاک اور 44 زخمی ہو گئے تھے۔

تیسرا واقعہ بغداد کے ایک مغربی شہر میں پیش آیا جہاں ایک شخص نے آرمي چیک پوسٹ کے پاس بھیڑ بھاڑ والے علاقے میں خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔ اس واقعہ میں فوج کے سات جوان سمیت 12 لوگوں کی موت ہو گئی اور کم از کم 24 دیگر زخمی ہو گئے۔ غور طلب ہے کہ كرراڈا ضلع میں جولائی 2016 میں ہوئے ٹرک بم حملے میں کم از کم 324 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ اس دھماکے کی ذمہ داری بھی آئی ایس نے لی تھی۔ حملہ آور عام طور پر رمضان کے مقدس مہینے میں صبح کی نماز اور کھانے پینے کے سازوسامان لینے کے لئے باہر نکلے والے لوگوں کو نشانہ بنا کر حملے کرتے ہیں۔

عراق میں خود کش بم دھماکے میں مہلوکین کی تعداد بڑھ کر 35 ہوئی

تصویر: رائٹرز

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز