امریکی محکمہ انصاف نے صدر ٹرمپ کے حکمنامہ پر عدالتی روک کو چیلنج کیا

Feb 05, 2017 10:30 AM IST | Updated on: Feb 05, 2017 10:30 AM IST

واشنگٹن۔  امریکی محکمہ انصاف نے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے سات مسلم ممالک کے لوگوں پر عارضی پابندی لگانے کے فیصلے کو معطل کرنے کے سیٹل کورٹ کے حکم کے خلاف اپیل دائر کی ہے۔ محکمہ انصاف نے یہ قدم فیڈرل جج کے فیصلے کو پلٹنے کے مقصد سے اٹھایا ہے۔ ٹرمپ انتظامیہ کے ایگزیکٹو آرڈر میں کہا گیا ہے کہ عراق، شام، ایران، لیبیا، صومالیہ، سوڈان اور یمن سے کوئی بھی شخص 90 دنوں تک امریکہ نہیں آ سکے گا۔ وہائٹ ہاؤس نے ایک بیان میں کہا کہ"عدالت کے فیصلے کے خلاف کی گئی یہ اپیل صدر کے ایگزیکٹو آرڈر کا دفاع کرنے کے لئے کی گئی ہے جو کہ درست اور مناسب ہے۔ صدر کے حکم کا مقصد ملک کی حفاظت کرنا ہے اور ان کے پاس امریکی شہریوں کی حفاظت کرنے کا آئینی حق اور ذمہ داری ہے"۔

واضح رہے کہ اس سے ایک دن قبل  سیٹل کورٹ کے ایک جج نے جمعہ کو سات مسلم اکثریت والے ممالک کے لوگوں کے امریکہ آنے پر روک لگانے کے ٹرمپ انتظامیہ کے فیصلے پر قومی سطح پر روک لگا دیا تھا۔ سیٹل کورٹ کے جج جیمس رابرٹ نے سرکاری وکلاء کے ان دعووں کو مسترد کر دیا تھا جن میں کہا گیا تھا کہ کوئي امریکی ریاست صدر ٹرمپ کے ایگزیکٹو حکم پر فیصلہ نہیں دے سکتی۔ صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے سیٹل کورٹ كے جج جیمس رابرٹ کے فیصلے کو مضحکہ خیز بتایا تھا۔

امریکی محکمہ انصاف نے صدر ٹرمپ کے حکمنامہ پر عدالتی روک کو چیلنج کیا

تصویر: رائٹرز

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز