امریکہ ٹی پی پی معاہدے سے ہٹا، اوبامہ کی خارجہ پالیسی کو دھچکا

واشنگٹن۔ امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے ٹرانس پیسفک پارٹنرشپ (ٹی پی پی) تجارتی معاہدے سے باہر نکلنے کا فیصلہ کیا ہے جس سے سابق صدر براک اوبامہ کی خارجہ پالیسی کو دھچکا لگا ہے۔

Jan 24, 2017 03:36 PM IST | Updated on: Jan 24, 2017 03:38 PM IST

واشنگٹن۔ امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے ٹرانس پیسفک پارٹنرشپ (ٹی پی پی) تجارتی معاہدے سے باہر نکلنے کا فیصلہ کیا ہے جس سے سابق صدر براک اوبامہ کی خارجہ پالیسی کو دھچکا لگا ہے۔  ٹرمپ نے کل اپنے اوول آفس میں اس سلسلے میں ایک حکم پر دستخط کئے۔ انہوں نے انتخابی مہم کے دوران وعدہ کیا تھا کہ اگر وہ صدر بنے تو امریکہ کو ٹی ٹی پی سے باہر کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ امریکی ملازمین اور مینوفیکچرنگ کے شعبے کے لئے نقصان دہ معاہدہ ہے۔ اس معاہدے کو اوبامہ انتظامیہ کی ایشیا پالیسی کا سب سے مضبوط قدم تصور کیا جاتا تھا۔

غور طلب ہے کہ یہ معاہدہ پانچ اکتوبر 2015 کو ہوا تھا جس میں یہ طے کیا گیا تھا کہ ٹی پی پی میں شامل ممالک کو کاروبار ٹیکس میں رعایت دی جائے گی۔ اس معاہدے میں اب امریکہ کو چھوڑ کر 11 ملک بچے ہیں جن میں جاپان، ملائیشیا، ویت نام، سنگاپور، برونائی، آسٹریلیا، نیوزی لینڈ، کینیڈا، میکسیکو، چلی اور پیرو شامل ہیں۔

امریکہ ٹی پی پی معاہدے سے ہٹا، اوبامہ کی خارجہ پالیسی کو دھچکا

تصویر: رائٹرز

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز