ترکی میں فوجی بغاوت میں ملوث72 افراد کی گرفتاری کا حکم

Jul 10, 2017 06:33 PM IST | Updated on: Jul 10, 2017 06:33 PM IST

استنبول: ترک حکومت نے گزشتہ سال کی ناکام فوجی بغاوت میں ملوث ہونے والے ایک لیڈر سمیت 72 یونیورسٹی ملازمین کے خلاف گرفتاری وارنٹ جاری کیا ہے۔ ترکی کی اناطول نیوز ایجنسی نے یہ اطلاع دی ہے۔

خبر رساں ایجنسی نے بتایا کہ مبینہ طورپر امریکہ میں مقیم مذہبی لیڈر فتح اللہ گولن کی جانب سے گزشتہ سال چلائی گئی تحریک کی تحقیقات کے سلسلے میں یہ گرفتاری وارنٹ جاری کئے گئے ہیں۔ گولن پر گزشتہ سال ترکی میں 15 جولائی کو ہونے والی فوجی بغاوت کی کوشش میں ملوث ہونے کا الزام ہے۔

ترکی میں فوجی بغاوت میں ملوث72 افراد کی گرفتاری کا حکم

سولہ جولائی دوہزار سولہ کو ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں بغاوت کی ایک ناکام کوشش کے دوران فوجی گاڑی کے سامنے ایک تباہ شدہ گاڑی کو دیکھا جا سکتا ہے۔ تصویر: رائٹرز

سکیولر سی ایچ پی پارٹی کے لیڈر کمال کلیکدار اوغلو نے کل ایک بہت بڑےجلسہ عام میں موجودہ حکومت کو چیلنج کرتے ہوئے اسے آمرانہ اقتدار بتایا۔مسٹر كليكدار اوغلو گزشتہ 25 دنوں سے مسلسل حکومت کے خلاف مظاہرہ کر رہے ہیں۔ اس سلسلے میں اتوار کو انقرہ سے استنبول تک ایک ریلی بھی نکالی گئی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز