ترک صدر رجب طیب اردغان نے بشار الاسد کو بتایا دہشت گرد ، کہا : ان کے ساتھ کام کرنا ناممکن

ترکی کے صدر رجب طیب اردغان نے شام کے صدر بشار الاسد کو دہشت گرد قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یا شام میں قیام امن کی کوششوں کیلئے ان کا ساتھ دینا ناممکن تھا

Dec 28, 2017 11:49 PM IST | Updated on: Dec 28, 2017 11:49 PM IST

استنبول : ترکی کے صدر رجب طیب اردغان نے شام کے صدر بشار الاسد کو دہشت گرد قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یا شام میں قیام امن کی کوششوں کیلئے ان کا ساتھ دینا ناممکن تھا ۔ تیونس کے دورے کے موقع پر صدر رجب طیب اردوان نے بیان میں کہا کہ شام کے مستقبل میں بشار الاسد کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے، اور شامی عوام خود بھی بشار الاسد کو صدر کے طور پر نہیں دیکھنا چاہتے۔

ترک صدر نے بشار الاسد کو دہشت گرد قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایسے شخص سے امن مذاکرات کی کوششیں ناممکن ہے ، جس کے ہاتھ 10 لاکھ افراد کے قتل میں رنگے ہوئے ہوں۔ طیب اردوان نے کہا کہ شمالی شام کو دہشت گردوں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے، شام میں سیکورٹی صورت حال انتہائی خراب ہے اور بشارالاسد کے ہوتے ہوئے وہاں امن ممکن نہیں ہے۔

ترک صدر رجب طیب اردغان نے بشار الاسد کو بتایا دہشت گرد ، کہا : ان کے ساتھ کام کرنا ناممکن

ترکی کے صدر رجب طیب اردغان ۔ فوٹو رائٹر

شام کی وزارت خارجہ کی جانب سے ترک صدر کے بیان پر ردعمل میں رجب طیب اردوان پر الزام عائد کیا گیا کہ وہ خود شامی خانہ جنگی میں بشار الاسد کے مخالف دہشت گرد گروپوں کی مدد کر رہے ہیں۔خیال رہے کہ شام میں مارچ 2011 سے خانہ جنگی جاری ہے جس میں اقوام متحدہ کی رپورٹ کے مطابق اب تک 5 لاکھ سے زائد لوگ ہلاک ہو چکے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز