بحیرہ روم پار کر رہے بیس تارکین وطن ہلاک: اقوام متحدہ

May 16, 2017 05:05 PM IST | Updated on: May 16, 2017 05:05 PM IST

روم۔  اقوام متحدہ کی پناہ گزیں ایجنسی نے گزشتہ ہفتے کے آخر میں بحیرہ روم پار کرکے اٹلی آ رہے 20 تارکین وطن کے درمیان میں ہی ڈوب کر ہلاک ہونے کا اندیشہ ظاہر کیا ہے۔ ایجنسی کی ترجمان كارلوٹا سیمی نے بتایا کہ بچاؤ مہم میں اب تک سات افراد کی لاشیں برآمد ہو چکی ہیں جبکہ سسلی کے ٹریپاني پہنچے پناہ گزینوں کے مطابق ابھی 13 افراد اور لاپتہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سمندر پار کر رہے لوگوں نے جب امدادی ٹیم کو اپنے قریب آتے دیکھا ہوگا تبھی ان کے درمیان افرا تفری مچی ہوگی۔ اسی افرا تفری میں ان میں سے بہت سے لوگ دب گئے ہوں گے اور بہت سے لوگ گھٹن کی وجہ سے پانی میں کود گئے ہوں گے اور مارے گئے ہوں گے۔

سیمی نے بتایا کہ لاپتہ افراد میں ایک بچہ ہے، بہت سی نائجیریائی خواتین ہیں اور آئیوری كوسٹ اور بنگلہ دیش کے شہری ہیں۔ تارکین وطن کے لیے بین الاقوامی تنظیم (آئی او ایم ) کے مطابق اس سال اب تک 1200 سے زائد افراد مارے جا چکے ہیں جبکہ 45 ہزار سے زیادہ لوگ محفوظ مقامات پر پہنچنے میں کامیاب ہو ئے ہیں۔

بحیرہ روم پار کر رہے بیس تارکین وطن ہلاک: اقوام متحدہ

تصویر: یو این آئی

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز