دہلی یونیورسٹی کی طالبہ کی جعلی تصویر لگانا پاکستانی محکمہ دفاع کو پڑا مہنگا ، ٹویٹر اکاونٹ معطل

Nov 19, 2017 03:54 PM IST | Updated on: Nov 19, 2017 03:54 PM IST

نئی دہلی : ہندوستان کے خلاف ایک مارف فوٹو پوسٹ کرنا پاکستان کو مہنگا پڑ گیاہے ۔ مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر نے پاکستان ڈیفنس کے آفیشیل اکاونٹ کو غلط فوٹو پوسٹ کرنے کی وجہ سے معطل کردیا ہے ۔ پاکستان ڈیفنس نے ایک ہندوستانی لڑکی کول پریت کور کی فوٹو شاپڈ تصویر اپنے سرکاری اکاونٹ سے ٹویٹ کیا تھا۔

در اصل کور پریت کور دہلی یونیورسٹی کی طلبہ کارکن ہیں ۔ انہوں نے ہندوستان میں ماب لنچنگ یعنی بھیڑ کے ذریعہ پیٹ پیٹ کر قتل کے واقعات کے خلاف جون 2017 میں چلی مہم ناٹ ان مائی نیم میں شرکت کرتے ہوئے ایک تصویر پوسٹ کی تھی ، جس میں وہ پلے کارڈ لئے کھڑی تھی ۔ اس پلے کارڈ میں لکھا تھا میں ہندوستانی شہری ہوں ،جو اپنے سیکولر آئین کے ساتھ کھڑی ہے ۔

دہلی یونیورسٹی کی طالبہ کی جعلی تصویر لگانا پاکستانی محکمہ دفاع کو پڑا مہنگا ، ٹویٹر اکاونٹ معطل

پاکستان نے کی تصویر کے ساتھ چھیڑ چھاڑ

پاکستان محکمہ دفاع کی جانب سے کور پریت کی اس تصویر کے ساتھ فوٹو شاپ کے ذریعہ چھیڑ چھاڑ کی گئی اور پلے کارڈ میں جو لکھا تھا اس کو بدل دیا گیا ۔ امیج مارف ہونے کے بعد کول پریت کے ہاتھ میں جو پلے کارڈ دکھایا گیا تھا ، اس پر ہندوستان کے خلاف لکھا ہوا تھا ۔پلے کارد میں لکھ دیا گیا تھا کہ میں ہندوستانی ہوں ، لیکن مجھے ہندوستان سے نفرت ہے ، کیونکہ اس نے ناگا ، کشمیر ، منی پور وغیرہ ریاستوں پر قبضہ کیا ہے۔

کول پریت نے ٹویٹر پر کی تھی شکایت

اس کی اطلاع ہونے کے بعد کول پریت نے ٹویٹر پر اس کی شکایت کی اور انہوں نے پاکستانی محکمہ دفاع کے اکاونٹ کو معطل کرنے کی بھی اپیل کی ، جس کے بعد یوزرس نے اس پیج کو رپورٹ کرنا شروع کردیا اور آخر کار ٹویٹر نے پاکستانی محکمہ دفاع کا آفیشیل اکاونٹ معطل کردیا ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز