Live Results Assembly Elections 2018

اسرائیل کا دورہ کرنے پر تنازع کی زد میں آئی برطانیہ کی ہند نژاد وزیر پریتی پٹیل نے دیا استعفی

برطانیہ میں ہندوستان نژاد وزیر پریتی پٹیل نے اسرائیل کے اپنے ذاتی دورہ پر تنازع ہونے کے بعد اپنے عہدہ سے استعفی دے دیا ہے۔

Nov 09, 2017 10:14 AM IST | Updated on: Nov 09, 2017 10:15 AM IST

لندن : برطانیہ میں ہندوستان نژاد وزیر پریتی پٹیل نے اسرائیل کے اپنے ذاتی دورہ پر تنازع ہونے کے بعد اپنے عہدہ سے استعفی دے دیا ہے۔ محترمہ پٹیل نے کل کہا، "ان سے جن اعلی معیار کی توقع کی جاتی ہے ان کے کام اس سے کمتر رہے ہیں۔ لہذا وہ اپنے عہدہ سے استعفی دیتی ہیں‘‘۔ قابل غور ہے کہ گذشتہ اگست میں 45 سالہ پٹیل ذاتی اورخاندانی تعطیلات منانے اسرائیل گئیں تھیں اور وہاں وزیر اعظم بنجامن نیتن یاہو اور دیگر اسرائیلی حکام سے ملاقات کی تھیں۔ اس بات کی معلومات انہوں نے برطانوی حکومت یا اسرائیل میں برطانوی سفارت خانے کو بھی نہیں دی تھی۔

بین الاقوامی ترقیات کی وزیر محترمہ پٹیل نے تنازعہ ہونے کے بعد پیر کو معافی مانگ لی تھی، لیکن اسے قبول نہیں کیا گیا. اس کے بعد انہیں افریقہ کا دورہ درمیان میں چھوڑ کر وطن لوٹنا پڑا۔محترمہ پٹیل حکمراں کنزرویٹو پارٹی کی لیڈر ہیں اور پارٹی میں ان کو ایک ابھرتی ہوئی لیڈر کے طور پر دیکھا جاتا ہے۔ وہ حکومت میں کئی اہم رول ادا کر چکی ہیں۔ گزشتہ سال جون میں محترمہ پٹیل کو بین الاقوامی ترقیات کا وزیر بنایا گیا تھا۔ وہ برطانیہ کی ترقی پذیر ممالک کو دی جانے والی اقتصادی امداد کا کام دیکھتی تھیں۔

اسرائیل کا دورہ کرنے پر تنازع کی زد میں آئی برطانیہ کی ہند نژاد وزیر پریتی پٹیل نے دیا استعفی

یوروپی یونین کی تنقیدکرنے والی محترمہ پٹیل کی کنزرویٹو حکومت میں اہم کردار تھا۔ انہوں نے ہم جنس پرستوں کی شادیوں کے خلاف ووٹ دیا تھا اور تمباکو نوشی پر پابندی کے خلاف بھی مہم چلائی تھی۔ اگرچہ وہ اسرائیل کی پرانی حامی رہی ہیں۔محترمہ پٹیل 2010 میں رکن پارلیمنٹ چنی گئی تھیں۔ بریگزٹ کی سب سے سرگرم حامی محترمہ پٹیل 2015 کے عام انتخابات کے بعد روزگار وزیر بنی تھیں۔

لندن میں یوگنڈا سے بھاگ کر آئے ایک گجراتی خاندان میں پیدا ہونے والی محترمہ پٹیل نے ویٹ فورڈ گرامر اسکول فار گرلز میں تعلیم حاصل کی ہے۔انہوں نے اعلی تعلیم کیل اور ایسیکس یونیورسٹی سے حاصل کی ہے۔ انہوں نے کنزرویٹو پارٹی کے مرکزی دفتر میں کام بھی کیا ہے اور وہ 1995 سے 1997 تک سر جیمز گولڈاسمتھ کی قیادت والی ریفرنڈم پارٹی کی ترجمان رہی ہیں۔ ریفرنڈم پارٹی برطانیہ کی یوروپی یونین مخالف پارٹی تھی.

Loading...

برطانیہ کی سابق وزیر اعظم مارگریٹ تھیچر کو اپنا آدرش لیڈر ماننے والی محترمہ پٹیل مسٹر ولیم ہیگ کے کنزرویٹو پارٹی کا رہنما بننے کے بعد پارٹی میں واپس آئی تھیں اور 1997 سے 2000 تک ڈپٹی پریس سکریٹری رہیں۔ وہ 2005 میں نا ٹنگھم سیٹ کے لئے انتخاب ہار گئی تھیں لیکن 2010 میں انہوں نے ویٹہم سیٹ سے الیکشن جیت لیا تھا۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز