برطانیہ کی پارلیمنٹ کے ایوان زیریں میں یوروپی یونین سے ملک کے اخراج کے بل کو منظوری

لندن۔ وزیر اعظم تھریسامے کو پارلیمنٹ کے ایوان زیریں سے برطانیہ کو یوروپی یونین سے باہر رکھنے ’’ بریکزٹ‘‘ کا عمل شروع کرنے کی منظوری مل گئی ہے ۔

Feb 09, 2017 08:06 PM IST | Updated on: Feb 09, 2017 08:07 PM IST

لندن۔  وزیر اعظم تھریسامے کو پارلیمنٹ کے ایوان زیریں سے برطانیہ کو یوروپی یونین سے باہر رکھنے ’’ بریکزٹ‘‘ کا عمل شروع کرنے کی منظوری مل گئی ہے ۔ اس سے مسز مے کو ’’بریکزٹ‘‘ کے عمل کو آگے بڑھانے کے لئے 31 مارچ کو مذاکرات شروع کرنے کے ارادے کو تقویت ملی ہے۔ اس کے علاوہ اس منظوری سے برطانیہ کے یوروپی یونین میں رہنے کی حمایت کرنے والے ممبران پارلیمنٹ کو کرارا جھٹکا لگا ہے۔ 650 رکنی ارکان والی پارلیمنٹ کے ایوان زیریں 494 ممبران نے برطانیہ کے یوروپی یونین سے انخلا کا باقاعدہ عمل شروع کرنے سے متعلق بل کے حق میں ووٹنگ کی جبکہ 122 ممبران نے اس کے خلاف ووٹ دیا۔

مسز مے کو ’’بریگزٹ‘‘ کا عمل شروع کرنے کے لئے اب پارلیمنٹ کے ایوان بالا کی منظوری چاہئے جہاں انہیں اکثریت حاصل نہیں ہے۔

برطانیہ کی پارلیمنٹ کے ایوان زیریں میں یوروپی یونین سے ملک کے اخراج کے بل کو منظوری

گیٹی امیجیز، فائل فوٹو

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز