punjab cm amrinder singh on kartarpur corridor un, پنجاب کے وزیراعلی کیپٹن امرندر سنگھ نے آج کہا کہ کرتارپور کوریڈور کھولنے کے تعلق سے پاکستان کی نیت پر بھروسہ نہیں کیا جاسکتا ہے کیونکہ اس کے پیچھے اس کا سیاسی ایجنڈہ اور بدنیتی چھپی ہوئی ہے جس کا مقصد سکھوں کے جذبات کا استحصال کرنا ہے۔– News18 Urdu

کرتارپور کوریڈور کے تعلق سے پاکستان کی نیت پر بھروسہ نہیں کیا جاسکتا : کیپٹن امرندر سنگھ

پنجاب کے وزیراعلی امرندر سنگھ نے کہا کہ پاکستان کا مقصد امن کو فروغ دینا نہیں ہے۔ ملک کرتارپور کوریڈور کو مذہبی نظریہ سے دیکھتا ہے لیکن پاکستان کا ایجنڈہ مکمل طورپر خوفناک ہے

Mar 16, 2019 09:49 PM IST | Updated on: Mar 16, 2019 09:49 PM IST

پنجاب کے وزیراعلی کیپٹن امرندر سنگھ نے آج کہا کہ کرتارپور کوریڈور کھولنے کے تعلق سے پاکستان کی نیت پر بھروسہ نہیں کیا جاسکتا ہے کیونکہ اس کے پیچھے اس کا سیاسی ایجنڈہ اور بدنیتی چھپی ہوئی ہے جس کا مقصد سکھوں کے جذبات کا استحصال کرنا ہے۔

کیپٹن سنگھ نے اپنی حکومت کے دو برس مکمل ہونے پر یہاں نامہ نگاروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وہ کوریڈور کے حق میں ہیں لیکن اس سلسلہ میں نہایت احتیاط برتے جانے کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان اپنے دوسرے منصوبوں کے مدنظر کارتارپور کوریڈور کی بات کررہا ہے ۔ اس کا مقصد امن کو فروغ دینا نہیں ہے۔ ملک کرتارپور کوریڈور کو مذہبی نظریہ سے دیکھتا ہے لیکن پاکستان کا ایجنڈہ مکمل طورپر خوفناک ہے۔

کرتارپور کوریڈور کے تعلق سے پاکستان کی نیت پر بھروسہ نہیں کیا جاسکتا : کیپٹن امرندر سنگھ

کپٹن امریندر سنگھ ۔ فائل فوٹو

وزیراعلی نے ریفرنڈم 2020کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ اس کی آڑ میں پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی سکھوں کے جذبات کا استحصال کررہی ہے۔ اس کے ذریعہ وہ نہ صرف پنجاب کو تقسیم کرنے اور عدم استحکام لانے کے لئے سرگرم ہے بلکہ پورے ملک میں بدامنی پھیلانا اس کا مقصد ہے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کے وزیراعظم عمران خان امن کی بات کرتے ہیں لیکن وہاں سے فوج کے سربراہ جنرل باجوامسلسل اپنے نفرت آمیز اردوں کو بڑھاوا دے رہے ہیں۔

Loading...

ایک سوال پر انہوں نے کہاکہ پاکستان کی طرف سے کوریڈور سے نکلنے والے عقیدت مندوں کی پیش کردہ تعداد بہت کم ہے لیکن وہ چاہتے ہیں کہ ہر روز تاریخی گردوارہ کرتار پور صاحب جانے والے عقیدت مندوں کی تعداد کم از کم 15000کی جائے۔

انہوں نے کہا کہ گردوارہ صاحب کے درشنوں پر کوئی بندش نہیں ہونی چاہئے لیکن پاکستان نے کوریڈور کے باوجود پاسپورٹ اور ویزہ لازمی کردی ہے جبکہ اس کی ضرورت نہیں ہے ۔ اس کے اس قدم سے غریب عقیدت گردوارے کے درشنوں سے محروم رہ جائیں گے۔

Loading...