بین الاقوامی برادری روہنگیا مسلمانوں کی صحیح سلامت وطن واپسی کو یقینی بنانے میں مدد کرے : اقوام متحدہ

اقوام متحدہ نے بین الاقوامی برادری سے اپیل کی ہے کہ وہ روہنگیا پناہ گزینوں کے مسئلے پر 23اکتوبر کو ہونے والے اجلاس میں ان پناہ گزینوں اور انہیں پناہ دینے والے بنگلہ دیش کو یہ پیغام دیں کہ پوری دنیا ان کے ساتھ مضبوطی سے کھڑی ہے

Oct 17, 2017 08:49 PM IST | Updated on: Oct 17, 2017 08:54 PM IST

اقوام متحدہ: اقوام متحدہ نے بین الاقوامی برادری سے اپیل کی ہے کہ وہ روہنگیا پناہ گزینوں کے مسئلے پر 23اکتوبر کو ہونے والے اجلاس میں ان پناہ گزینوں اور انہیں پناہ دینے والے بنگلہ دیش کو یہ پیغام دیں کہ پوری دنیا ان کے ساتھ مضبوطی سے کھڑی ہے۔ اقوام متحدہ کی تین اکائیوں نے کانفرنس سے پہلے کل یہاں جاری مشترکہ بیان میں کہا،’’ہم بین الاقوامی برادری سے اپیل کرتےہیں کہ وہ روہنگیا پناہ گزینوں کی پریشانیوں،ان کی منتقلی کو روکنے کے لئے اور ایسے حالات بنانے کےلئے کوشش کریں جس میں پناہ گزینوں کی صحیح سلامت واپسی یقینی ہوسکے۔

منتقلی کرنے والوں کےلئے بین الاقوامی تنظیم (او سی ایس اے)کے ڈائریکٹر جنرل ولیم لیسی سونگ اقوام متحدہ پناہ گزین ہائی کمیشن فلپو گراندی اور انسانی امور کے کوآرڈینیشن دفتر نے بیان میں کہا کہ پناہ گزین خوراک،پینے کے پانی اور دوا جیسی ضروری چیزوں کےلئے پوری طرح انسانی امداد پر منحصر ہیں۔پانی اور صاف صفائی کی کمی میں ان کی صحت خراب ہونے کا خطرہ پیدا ہوگیا ہے۔

بین الاقوامی برادری روہنگیا مسلمانوں کی صحیح سلامت وطن واپسی کو یقینی بنانے میں مدد کرے : اقوام متحدہ

بنگلہ دیش میں روہنگیا پناہ گزین ۔ فائل فوٹو

روہنگیا پناہ گزینوں اور انہیں پناہ دینے والوں کی مدد کےلئے 43لاکھ ڈالر کی مدد ہوگی۔ایک اندازے کے مطابق ان لوگوں کی تعداد 12لاکھ ہے۔ یہ تنظیمیں کویت اور یورپی یونین کے ساتھ مل کر 23اکتوبر کو جینیوا میں وزرا کی سطح کا اجلاس کرنے جارہی ہیں۔مختلف ملکوں کی حکومتیں اس موقع پر پناہ گزینوں کے ساتھ تعاون دکھانے اور ان کی ذمہ داریوں کو بانٹنے کا عزم ظاہر کرسکتی ہیں۔ اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ میانمار کے رکھائن صوبے میں تعصب اور استحصال سے بچنے کےلئے لاکھوں روہنگیا گزشتہ سال اگست سے بھاگ کر پڑوسی ملک بنگلہ دریش میں پناہ لے رہے ہیں جس سے انسانی ہنگامی صورتحال پیدا ہوگئی ہے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز