موصل سے روزانہ 2000 عراقی بے گھر ہو رہے ہیں: اقوام متحدہ

Jan 05, 2017 03:38 PM IST | Updated on: Jan 05, 2017 03:38 PM IST

موصل۔ اقوام متحدہ نے آج بتایا کہ روزانہ تقریبا 2000 عراقی موصل چھوڑ کر جا رہے ہیں اور ان کی تعداد روز بڑھ رہی ہے۔ اقوام متحدہ کے مطابق امریکہ کی قیادت والے اتحادی فوج موصل کو دہشت گرد تنظیم اسلامک اسٹیٹ کے چنگل سے آزاد کرانے کے لیے جنگ کا اگلا مرحلہ شروع کرنے والی ہے، جس کی وجہ سے موصل سے مسلسل عراقی شہری محفوظ ٹھکانوں کی طرف جانے پر مجبور ہیں۔ کئی ہفتوں تک چلنے والی جنگ کے بعد عراقی فوج گذشتہ جمعرات کو موصل کے مشرقی سمت ٹگرس دریا تک پہنچنے میں کامیاب رہی تھی۔

امریکہ اتحاد والی عراقی فوج اکتوبر میں آئی ایس سے شروع ہونے والی جنگ کے بعد موصل کے ایک چوتھائی حصے پر قبضہ کر چکی ہے۔ لیکن یہاں امید کے برعکس پانی اور کھانے کی اشیاء کی قلت ہو گئی ہے پھر بھی کئی باشندے اب تک یہاں رہنے کو مجبور ہیں۔

موصل سے روزانہ 2000 عراقی بے گھر ہو رہے ہیں: اقوام متحدہ

اقوام متحدہ پناہ گزین ایجنسی کے مطابق اب تک کل 1،25،000 شہری یہاں سے بے گھر ہو چکے ہیں لیکن اب یہاں سے بے گھر ہونے والے شہریوں کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔ گذشتہ کچھ دنوں میں روزانہ 1600 شہریوں کے مقابلے اب روز تقریبا 2300 شہری یہاں سے بے گھر ہو رہے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز