شمالی کوریا کشیدگی: امریکہ و شمالی کوریا کی مہم

سیول۔ اقوام متحدہ کی پابندی کے باوجود شمالی کوریا کی جانب سے کئے گئے میزائل تجربے کی وجہ سے بڑھتی ہوئی کشیدگی کے درمیان شمالی کوریا اور امریکہ نے آج یہاں مشترکہ فوجی مہم کا آغاز کیا۔

Aug 21, 2017 01:40 PM IST | Updated on: Aug 21, 2017 01:40 PM IST

سیول۔ اقوام متحدہ کی پابندی کے باوجود شمالی کوریا کی جانب سے کئے گئے میزائل تجربے کی وجہ سے بڑھتی ہوئی کشیدگی کے درمیان شمالی کوریا اور امریکہ نے آج یہاں مشترکہ فوجی مہم کا آغاز کیا۔ شمالی کوریا کے صدر مون جاڈ ان نے کہا کہ ایلچی فریڈم گارجین نامی یہ مہم پوری طرح دفاعی ہے۔ اس کا مقصد کوریائی جزیزے میں کشیدگی پھیلانا نہیں ہے ۔

مسٹر مون نے اپنے کابینی وزیر سے کہا کہ دفاع کی یہ مہم ہر سال چلائی جاتی ہے۔ جس کا مقصد کوریائی جزیرے میں کشیدگی پھیلانا قطعاً نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ شمالی کوریا کو امن قائم کرنے کی ہماری کوششوں اور ماحول کو اور خراب کرنے کی کسی بھی کوشش میں شامل نہیں ہونا چاہئے۔ امریکہ۔شمالی کوریا کی مشترکہ فوجی مہم 31 اگست تک چلے گی۔ اس کے تحت نیوکلیئر میزائل سے لیس شمالی کوریا کے خلاف کمپیوٹر سے بنے ڈیزائن کی مدد سے جنگ کی حکمت عملی بنانے کی تربیت بھی جوانوں اور افسران کو دی جائے گی۔

شمالی کوریا کشیدگی: امریکہ و شمالی کوریا کی مہم

شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ ان: فائل فوٹو

امریکہ نے بھی اس مہم کو دفاعی رجحان کا بتایا ہے۔ حالانکہ شمالی کوریا نے اسے صاف خارج کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ دوہری شبیہ کا مظہر ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز