امریکہ کا روہنگیا مسلمانوں کے خلاف تشدد پر پھر اظہار تشویش ، ا نسانی امداد پہنچانے میں فوج سے مدد کی اپیل

Oct 27, 2017 12:53 PM IST | Updated on: Oct 27, 2017 12:53 PM IST

واشنگٹن: امریکہ کے وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن نے میانمار کے فوجی سربراہ من آنگ ہالیانگ سے بات چیت میں صوبہ رخائن میں روہنگیا مسلمانوں کے خلاف جاری تشدد پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ امریکہ کی وزارت خارجہ کی جانب سے کل جاری ایک بیان میں کہاگیاہے کہ مسٹر ٹلرسن نے رخائن میں تشدد کو ختم کرنے کے لئے مسٹر هاليانگ سے میانمار کی حکومت کی حمایت کرنے کی اپیل کی ہے۔ مسٹر ٹلرسن نے بے گھر لوگوں کو انسانی امداد پہنچانے میں بھی فوج سے مددکی اپیل کی۔

قابل غور ہے کہ روہنگیا ئی اقلیتوں کے خلاف 25 اگست سے شروع ہونے والے تشدد کے بعد اب تک چھ لاکھ سے زائد لوگ اپنی جان بچا کر بنگلہ دیش پہنچ چکے ہیں۔ اس سے قبل امریکہ کی وزارت خارجہ نے روہنگیا کے خلاف تشدد کو نسلی تشدد قرار دیا تھا۔

امریکہ کا روہنگیا مسلمانوں کے خلاف تشدد پر پھر اظہار تشویش ، ا نسانی امداد پہنچانے میں فوج سے مدد کی اپیل

میانمار کے مرکزی وزیر برائے سماجی بہبود ، راحت رسانی و بازآبادکاری مسٹر وین میاٹ اویا نے جنیوا میں پناہ گزین کمیشن کی ایگزیکٹو کمیٹی کو بتایا کہ ان کی حکومت کی اولین ترجیح میانمار سے در بدر ہوکر بنگلہ دیش جانے والے روہنگیا پناہ گزینوں کو وطن واپس لانا ہے۔ : رائٹرز۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز