پاکستان کے مشہور کلاسیکی گلوکار استاد بڑے فتح علی خان کا انتقال

Jan 05, 2017 11:56 PM IST | Updated on: Jan 05, 2017 11:56 PM IST

اسلام آباد: پاکستان کے مشہور کلاسیکی گلوکار استاد بڑے فتح علی خان کا انتقال ہو گیاہے ۔ وہ 81 سال کے تھے۔ پاکستان کے روزنامہ ڈان کے مطابق استاد فتح کا انتقال یہاں کے پی آئی ایم ایس اسپتال میں ہوا۔ گزشتہ 10 دنوں سے ان کا اس اسپتال میں علاج چل رہا تھا۔ وہ طویل عرصے سے پھیپھڑوں کی بیماری میں مبتلا تھے۔

خاندانی ذرائع کے مطابق فتح علی خان کو آج لاہور میں سپردِخاک کیا جائے گا۔ خیال، ٹھمری اور قوالی سے گائیکی کے میدان میں خاص شناخت بنانے والے استاد بڑے فتح علی خان کے پاکستان کے علاوہ ہندوستان ، امریکہ، کینیڈا، جنوبی افریقہ اور مغربی ایشیا میں بھی بڑی تعداد میں بھی پرستارہیں۔ پٹیالہ گھرانے سے منسلک استاد فتح علی خان گلوکار امانت علی خان اور حامد علی خان کے چھوٹے بھائی تھے۔ امانت علی خان کے ساتھ ان کی کمال کی جوڑی تھی۔

پاکستان کے مشہور کلاسیکی گلوکار استاد بڑے فتح علی خان کا انتقال

وہ اپنے خاندان کی چھٹی نسل کے کلاسیکی گلوکار تھے۔ 1935 میں پنجاب کے پٹیالہ (ہندوستان ) میں پیدا ہوئے استاد بڑے فتح علی خان نے اپنے بچپن میں ہی اپنی گائیکی کا لوہا مناوايا تھا۔ 1969 میں انہیں اس وقت کے صدر نے ’’پرائڈآف پرفورمنس میڈل سے نوازا تھا۔ وہ جانےمانے کلاسیکی اور راک گلوکار شفقت امانت علی کے چچا تھے۔

ان کے انتقال پر غم کا اظہار کرتے ہوئے شفقت نے ان کی تصویر کو ٹویٹ کرتے ہوئے کل کہا کہ استاد فتح علی خان صاحب کے انتقال سے پٹیالہ گھرانے میں ہم سب کے لئے ایک دور کا اختتام ہوا۔‘‘ چار سو سے زیادہ راگ اور گانوں میں آواز دینے والے استاد فتح علی خان کا سب سے زیادہ مقبول گانا 'مورا پیا مو سے بولے ناہی‘‘ تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز