جرمنی میں جی 20 کے خلاف مظاہرہ میں پرتشدد جھڑپیں

Jul 10, 2017 12:36 PM IST | Updated on: Jul 10, 2017 12:36 PM IST

ہیمبرگ۔  جرمنی کے شہر ہیمبرگ میں منعقدہ جی 20 سربراہ اجلاس کے خلاف ہونے والے احتجاجی مظاہروں کے دوران ہونے والی پرتشدد جھڑپوں میں دو سو سے زائد پولیس اہلکار زخمی ہوئے ہیں اور 143 لوگ گرفتار اور 122 لوگ حراست میں لئے گئے۔ پولیس نے کل دیر شام کانفرنس کے ختم ہونے کے بعد لوگوں کو منتشر کرنے کے لئے پانی کا بوچھار کیا لیکن مظاہرین نے پولیس اہلکاروں کے اوپر پانی کی بوتلیں اور دیگر اشیاء پھینکے۔ ہنگامی سروس کے حکام نے کہا کہ اس دوران کئی افراد زخمی ہوئے ہیں جن کا علاج کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے تاہم زخمیوں کی تعداد کے بارے میں نہیں بتایا ہے۔ پولیس اور مظاہرین کے درمیان جمعہ کی رات کو ہونے والے تشدد کے بعد کل سارا دن کشیدگی برقرار رہی۔ اس دوران مظاہرین نے دکانوں کو لوٹ لیے، کاریں اور دیگر سامانوں میں آگ لگا دی۔ شہر کے اہم راستوں پر سیکورٹی فورسز کو تعینات کیا گیا تھا اور دکانوں کو بند رکھا گیا تھا۔

جی 20 کی مخالفت میں یہاں کل دوپہر بعد 50 ہزار سے زائد مظاہرین جمع ہوئے تھے۔ اس دوران تقریباً 120 لوگوں کے ایک گروپ جس میں کچھ لوگوں نے ماسک لگا کر پولیس پر حملہ کر دیا۔ جرمنی کی چانسلر انجیلا مرکیل نے سربراہ اجلاس ختم ہونے کے بعد پولیس اور سیکورٹی فورسز سے ملاقات کرکے امن برقرار رکھنے کے لئے ان کا شکریہ ادا کیا اور تشدد کی مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ اگرچہ مظاہرہ کے دوران زیادہ تر لوگوں نے پرامن طریقے سے مخالفت کی ہے۔

جرمنی میں جی 20 کے خلاف مظاہرہ میں پرتشدد جھڑپیں

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز