ابو عاصم اعظمی کا فساد متاثرہ نندوربار کا دورہ ، ہرجانہ اور مظلومین کیلئے انصاف کا مطالبہ

Jun 16, 2017 05:33 PM IST | Updated on: Jun 16, 2017 05:33 PM IST

ممبئی: سماجوادی پارٹی لیڈر ور کن اسمبلی ابوعاصم اعظمی نے نندوربارشہر کے فساد زدہ علاقہ کا دورہ کیا اور متاثرین سے ملاقات کرکے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایک شرپسند سچن پاٹل نے ایک بے گناہ تاجر شبیر منصوری پر مہلک حملہ کیا جس سے شہر کے حالات خراب ہوئے لیکن پولیس نے سوجھ بوجھ کی بجائے یکطرفہ کارروائی کی جس کی وجہ سے مقامی مسلمانوں میں غم و غصہ پایا جارہا ہے۔ سماجوادی پارٹی لیڈر ابوعاصم اعظمی نے گزشتہ جمعرات کو پارٹی کے ایک وفد کے ساتھ جس میں ایوب شیکاسن، شادمان فاروقی ، شاہنواز خان ، ہارون رشیدعرف ببلو ،محمد اسحاق منصوری شامل تھے۔

وفد نے متارہ مرحوم شبیر منصور ی کے گھر جاکر ان کے اہل خانہ سے بھی ملاقات کی بعد ازاں ابوعاصم اعظمی نے سرکاری ریسٹ ہاؤس یں ایس پی دیہاڑے ڈی وائے ایس پی پوار کیساتھ گفتگو میں مسلمانوں کی شکایت اور مطالبات سے انہیں آگاہ کیا ۔ مچھی بازار ہال میں ایک عوامی اجلاس سے مخاطب ہوکر سماجوادی پاری لیڈر نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ عرصہ دراز سے یہ حالت ہے کہ جارحانہ حملوں اور تشدد میں مسلمان ہی مارے جاتے ہیں مسلمانوں کا نقصان ہوتا ہے مسلمانوں کی ہی زیادہ گرفتاریاں ہوتی ہیں مادن کمیشن , سری کرشنا کمیشن اور کئی فسادات کی رپورٹ میں یہ بات واضح ہوئی ہے ۔اس لئے مسلمانوں کو جوش سے نہیں ہوش سے کام لینا چاہئے جارحانہ ماحول میں ہوش نہیں کھونا چاہئے کیونکہ مسلمان اگر پتھر پھینکتے ہیں تو ان کے خلاف دفعہ 307 کا کیس درج کیا جاتا ہے ۔

ابو عاصم اعظمی کا فساد متاثرہ نندوربار کا دورہ ، ہرجانہ اور مظلومین کیلئے انصاف کا مطالبہ

(PTI File Photo)

جو بات چیت ہوئی اس کے مطابق عید الفطر تک تمام گرفتاریوں پر روک لگا دی گئی ہے اس درمیان مقامی مسلمانوں کی ایک 5 رکنی کمیٹی تشکیل دی گئی جسکے اراکین ہیں پولیس افسران ,مقامی محکمہ پولیس اس رابطہ کمیٹی میں مشورے کر کے ہی کوئی نئی گرفتاری پولیس کریگی اور جن کے ویڈیو کلپ ہوں گے صرف انہیں ہی گرفتار کیا جائے گا بے قصور افراد کو پکڑا نہیں جائیگا آئندہ تمام گرفتاریوں کے معامل میں پولیس مقامی مسلمانوں کی 5 رکنی رابطہ کمیٹی کو اعتماد میں لے گی ۔ ابوعاصم اعظمی نے مقامی اداروں کی مانگ پر یہ بھی یقین دلایا کہ ممبئی میں وزیر اعلی مہاراشٹر سے ملاقات کر کے انہیں فساد میں جن کا جانی نقصان ہوا ہے انہیں فی کس 25 لاکھ روپئے ہرجانہ ادا کرنے کا مطالبہ بھی کریں گے ۔

ابوعاصم اعظمی نے یہ بھی کہا کہ کچھ انتہا پسند غنڈہ عناصر یہاں پر امن مسلمانوں کے خلاف جارحیت کے ذریعہ شہر کا ماحول خراب کر رہے ہیں مقامی اداروں نے ایسے شرپسندوں کے نام فراہم کئے ہیں ڈی وائی ایس پی وار نے اسبات کی تصدیق کی کہ ان میں کئی ریکارڈ یافتہ غنڈے ہیں انہوں نے ان کے خلاف ایم پی ڈی اے قانون کے تحت کارروائی کا یقین دلایا ۔ ابوعاصم اعظمی نے مقامی افراد سے درخواست کی کہ وہ شہر کے سیکولر اور انصاف پسند ہندوؤں سے ربط و ضبط بڑھائیں تاکہ فرقہ پرست شرپسندوں کے منصوبے ناکام بنائے جاسکیں ۔

انہوں نے مزید کہا کہ آج پورے ملک کے حالات نازک ہیں اس کے مد نظر سوجھ بوجھ کا مظاہرہ کر نا چاہئے ہم اپنے نوجوانوں کو بزدل بنانا نہیں چاہتے لیکن جوش میں مسلم نوجوان خود اپنا نقصان کر کے جیل پہنچ جائیں ہم ایسی صورتحال سے بھی قوم کو بچانا چاہتے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز