سوچھ بھارت ابھیان کی اڑ رہیں دھجیاں، مسجد اور قبرستان کے سامنے گندگی کے انبار

Oct 10, 2017 07:46 PM IST | Updated on: Oct 10, 2017 07:46 PM IST

  اکولہ۔ سوچھ بھارت کے تحت پورے ملک میں گندگی سے نجات حاصل کرنے کے لئے مہم چلائی جا رہی ہے۔  لیکن آکولہ کے نائےگاؤں میں مسجد اور قبرستان کے سامنے ہی میونسپل کارپوریشن گندگی کے انبار لگا رہا ہے، جس کی وجہ سے مقامی لوگوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ میونسپل کارپوریشن کے غیر منصفانہ رویہ کے خلاف کئی بار احتجاج کیا جا چکا ہے تاہم اب مقامی عوام نے اس معاملے میں عدالت کا رخ  کرنے فیصلہ کیا ہے۔

ملک میں سوچھ بھارت ابھیان کا بول بالا ہے۔ پاکی نصف ایمان ہے ۔ اس بات کا درس مساجد میں بھی دیا جاتا ہے۔ لیکن مہاراشٹرکے اکولہ میں ٹھیک مساجد کے سامنے ہی گندگی کے انبار لگائے جا رہے ہیں۔ جس سے نہ صرف سوچھ بھارت ابھیان کی دھجیاں اڑرہی ہیں بلکہ مذہبی جذبات کو بھی ٹھیس پہنچ رہی ہے۔ نمازیوں کو اس گندگی کی وجہ سے پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ آکولہ میونسپل کارپوریشن کےحدود میں چار زون بنائےگئے ہیں لیکن پورے شہر کا کچرا ایک ہی علاقے میں لاکر ڈالا جا رہا ہے۔ مقامی لوگوں کا ماننا ہے کہ ڈمپنگ گراؤنڈ  کے قریب  مسلم بستی ہونے کی وجہ سے جان بوجھ کر پورے شہر کی گندگی ایک ہی جگہ لائی جا رہی ہے۔

سوچھ بھارت ابھیان کی اڑ رہیں دھجیاں، مسجد اور قبرستان کے سامنے گندگی کے انبار

ڈمپنگ گراؤنڈ سے کچھ دوری پر مسجد، عیدگاہ، مسلم قبرستان کےعلاوہ شمشان بھومی بھی واقع ہے۔ ڈمپنگ گراؤنڈ  کی گندگی باہر پڑی رہنے کی وجہ سے تدفین کےلئے مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ وہیں میونسپل کارپوریشن  شہر کے چاروں زونوں کے لئے علیحدہ ڈمپنگ گراؤنڈ  تعمیر کرنے کا یقین دلا رہا ہے تاہم اس پر عمل درآمد ہوتا نہیں دکھائی دے رہا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز