ہائی وے کے اطراف ایک ہزار سے زائد شراب کی دکانیں بند: سپریم کورٹ کے فیصلہ پر عمل

Apr 03, 2017 02:20 PM IST | Updated on: Apr 03, 2017 02:20 PM IST

ممبئی۔ ہائی وے اور قومی شاہراہ کے اطراف پانچ سو میٹر کے احاطے میں شراب کی فروخت کی پابندی والے سپریم کورٹ کے حالیہ فیصلے کے پیش نظر آج یہاں مہاراشٹر میں تقریباً ایک ہزار سے زائد شراب کی دکانیں اور مے خانے بند دکھائی پڑے جس میں ممبئی ایئر پورٹ کے قریب واقع وی آئی پی لانچ بھی شامل ہے۔ انڈین ہوٹل اینڈ ریسٹورنٹ ایسوسی ایشن کے صدر آدرش شیٹی نے آج یہاں اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سپریم کورٹ کے اس فیصلے کا نفاذ یکم اپریل سے عمل میں آیا ہے جس کے سبب مہاراشٹر کو تقریباً سات ہزار کروڑ کی ٹیکس وصولی سے نقصان ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کے ہائی وے اور قومی شاہراہ پر ایک بڑی تعداد میں تین ستارہ اور پانچ ستارا ہوٹل بھی موجود ہیں جو کروڑوں روپیہ کی لاگت سے تیار کی گئی ہیں نیز عدالت کے اس فیصلے سے ان ہوٹلوں کو بھی نقصان پہنچا ہے اور ان ہوٹلوں میں بھی ایک جانب جہاں شراب دستیاب نہیں ہے وہیں گاہکوں کی تعداد اب نصف سے بھی کم ہو کر رہ گئی ہے۔

آدرش شیٹی نے مزید کہا کہ ممبئی ایئر پورٹ پر واقع وی ائی پی لانچ میں زیادہ تر غیر ملکی جہازوں کے مالکان ہی اسے استعمال کرتے ہیں نیز عدالت کے اس فیصلے سے غیر ملکیوں میں بھی بے چینی پھیلی ہوئی ہے۔

ہائی وے کے اطراف ایک ہزار سے زائد شراب کی دکانیں بند: سپریم کورٹ کے فیصلہ پر عمل

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز