اگر کانگریس نے مطالبات نہیں مانے تو پھر تیسری پارٹی کے بارے میں کیا جائے گا غور: مفتی رضوان تاراپوری

کانگریس جہاں اقتدار میں واپسی کے لئے ہاتھ پاؤں مار رہی ہے تو بی جے پی اپنے اقتدار کو برقرار رکھنے کی جدوجہد میں لگی ہوئی ہے۔

Oct 05, 2017 07:15 PM IST | Updated on: Oct 05, 2017 07:15 PM IST

احمد آباد۔ گجرات میں اسمبلی انتخابات کی سرگرمیاں تیز ہو گئی ہیں۔ کانگریس جہاں اقتدار میں واپسی کے لئے ہاتھ پاؤں مار رہی ہے تو بی جے پی اپنے اقتدار کو برقرار رکھنے کی جدوجہد میں لگی ہوئی ہے۔ دونوں پارٹیوں کی نظر ریاست کے پٹیل ووٹوں پر ہے۔ لیکن ان تمام کے درمیان مسلم ووٹروں کو نظر انداز کیا جا رہا ہے۔ دراصل گجرات کی 182 اسمبلی سیٹوں میں سے 18 سیٹوں پر مسلم ووٹر امیدواروں کے ہار جیت کا فیصلہ کرتے ہیں ۔ گجرات میں بی جے پی مسلم امیدواروں کو میدان میں اتارنے سے جہاں گریز کر رہی ہے وہیں کانگریس جتنے مسلم امیدواروں کو ٹکٹ دینا چاہئے اتنے امیدواروں کو ٹكٹ نہیں دے رہی ہے ۔

 اس سلسلے میں گجرات کانگریس کے ترجمان ڈاکٹر منیش دوشی کا کہنا ہے کہ كانگریس کے نظریات کو ماننے والے معاشرے کے ہر طبقے کے لوگوں کو ٹکٹ دیا جائے گا۔  ساتھ ہی ساتھ انہوں نے کہا کہ گجرات کانگریس چاہتی ہے کہ زیادہ سے زیادہ مسلم امیدواروں کو میدان میں اتارا جائے تو وہیں گجرات میں مسلم امیدواروں کو لے کر آل انڈیا ملی كونسل کے گجرات یونٹ صدر نے کہا کہ ہم نے الیکشن میں مسلم کمیونٹی کے لوگوں میں بیداری پھیلانے کو لے کر پوری تیاری کر لی ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ پورے گجرات میں 12 سے 14 سیٹوں پر مسلم امیدوار جیت حاصل کر سکتے ہیں ۔ اس لئے ہم نے کانگریس سے مطالبہ کیا ہے کہ ان سیٹوں پرمسلم امیدواروں کو اتارا جائے ۔

اگر کانگریس نے مطالبات نہیں مانے تو پھر تیسری پارٹی کے بارے میں  کیا جائے گا غور: مفتی رضوان تاراپوری

مفتی رضوان تاراپوری، صدر آل انڈیا ملی كونسل گجرات

ملی كونسل کے گجرات یونٹ صدر مفتی رضوان تارا پوری نے کہا کہ ہم آنے والے دنوں میں ان تمام سیٹوں کا دورہ کرنے والے ہیں اور وہاں کے مسلم ووٹروں کی رائے لینے والے ہیں ۔ جس کے بعد کانگریس اعلی کمان سے مسلم امیدواروں کو میدان میں اتارنے کا مطالبہ کیا جائے گا۔ اگر کانگریس ہمارے مطالبات کو نہیں مانتی تو ہم کسی تیسری پارٹی کے بارے میں غورکریں گے ۔ غور طلب ہے کہ گزشتہ الیکشن میں کانگریس نے صرف 6 مسلم امیدواروں کو میدان میں اتارا تھا جن میں سے 2 مسلم امیدواروں کی جیت ہوئی تھی۔

Loading...

Loading...