الورموب لنچنگ: قتل کے ملزمین کووشوہندوپریشد نے بتایا بھگت سنگھ، چندرشیکھراورراج گرو

گئو رکشکوں کے خلاف چارج شیٹ دائرکئے جانے کی مخالفت میں وی ایچ پی نے’’دھرم سبھا‘‘ بلاکرملزمین کو رہا کرانے کا اعادہ کیا۔

Sep 12, 2018 08:07 PM IST | Updated on: Sep 12, 2018 08:15 PM IST

وشو ہندو پریشد (وی ایچ پی) نے راجستھان کے الور میں اکبر خان نام کے شخص کی لنچنگ کے معاملے میں ملزمین کا موازنہ مجاہدین آزادی سے کی ہے۔ ملزم مبینہ گئو رکشکوں کے خلاف چارج شیٹ دائر کئے جانے کی مخالفت میں وی ایچ پی نے ’’دھرم سبھا‘‘ بلائی تھی، جس میں تینوں ملزمین کو بھگت سنگھ، چندر شیکھر اور راج گرو بتایا گیا۔

اس تقرہن میں ملزمین میں سے ایک نول کشور بھی موجود تھا اور اس نے ہی سبھی ملزمین کا موازنہ مجاہدین آزادی سے کی۔ وشو ہندو پریشد نے اس پروگرام میں ملزمین کو کسی بھی قیمت پر رہا کرانے کے عزم کا اظہار کیا اور وارننگ جاری کرتے ہوئے کہا کہ جہاں سے بھی گائے کی کھال برآمد ہوگی، وہاں اب سے سمادھی بنا کر میلا لگوایا جائے گا۔

الورموب لنچنگ: قتل کے ملزمین کووشوہندوپریشد نے بتایا بھگت سنگھ، چندرشیکھراورراج گرو

الور موب لنچنگ میں ہلاک ہوئے اکبر خان کے اہل خانہ احتجاج کرتے ہوئے: فائل فوٹو

اکبر خان کی مبینہ طور پربھیڑ کے ذریعہ پیٹ پیٹ کر قتل کیا گیا۔ قتل کے معاملے میں گرفتار تین ملزمین کے خلاف جمعہ کو حلف نامہ داخل کیا گیا۔ رام گڑھ پولیس تھانہ کے انچارج چوتھمل جھاکھڑ نے بتایا کہ بھادس کی دفعہ 302 (قتل)  کے تحت یہ حلف نامہ الور کی عدالت میں داخل کیا گیا ہے۔ تین ملزمین میں دھرمیندر یادو، پرمجیت سنگھ اور نریش کمار ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:    الور موب لنچنگ: مقتول اکبر کو رات ایک بجے کیا گیا سپرد خاک، تین افراد گرفتار، دیگر کی بھی شناخت

واضح رہے کہ الور ضلع میں گائے اسمگلنگ کے شک میں کچھ لوگوں نے 20 جولائی کی رات کو اکبر خان کی بری طرح پٹائی کی۔ اس کے بعد اسپتال میں موت ہوگئی۔ ریاستی حکومت نے اس معاملے میں عدالتی جانچ کے احکامات دیئے تھے۔ ریاست کے وزیرداخلہ نے کہا تھا کہ ثبوتوں سے تو یہ حراست میں موت کا معاملہ نظرآتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   الور موب لنچنگ واقعہ: اویسی نے کیا ٹویٹ، مودی حکومت کے چار سال ۔ لنچ راج

یہ بھی پڑھیں:  الور میں پہلو خان کے بعد ایک اور موب لنچنگ واقعہ، گایوں کی اسمگلنک کے شک میں اکبر کا قتل

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز