عمر کا قتل دو جرائم پیشہ گروہوں کے درمیان مارپیٹ اور فائرنگ کا نتیجہ: الور پولیس

Nov 15, 2017 09:36 AM IST | Updated on: Nov 15, 2017 10:21 AM IST

الور۔ راجستھان کے الور ضلع میں ایک مبینہ گئو اسمگلر کے قتل کو گوندگڑھ پولیس نے دو گروہوں کے حملے اور فائرنگ کے نتیجے میں ہونے والا قتل بتایا ہے۔ گووندگڑھ پولیس نے واضح کیا ہے کہ اب تک کی تحقیقات میں جو باتیں سامنے آئی ہیں وہ یہ ہیں کہ دونوں ہی گروہ مجرمانہ سرگرمیوں میں ملوث ہیں اور یہ واقعہ دو مجرموں کے درمیان حملہ اور فائرنگ کے نتیجے میں پیش آیا ہے۔ اس میں طاہر اور جاوید نے جعلی نمبر پلیٹیں استعمال کی ہیں۔ اس معاملے میں گرفتار ملزم بھگوان عرف کالا گروہ کے ذریعہ قتل، لوٹ اور قتل کرنے کی کوشش کا معاملہ پایا گیا ہے۔

پولیس نے بتایا کہ پک اپ گاڑی میں چھ جانوروں کو اسمگلنگ کے لئے لے جایاجا رہا تھا۔ جس میں ملزم طاہر، مقتول عمر اور جاوید سوار تھے۔ اس معاملے میں گرفتار بھگوان ، رام ویر اور اس کے دیگر چارساتھیوں نے پک اپ گاڑی کوروکا۔ دونوں گروہوں کی آپس میں مارپیٹ ہوئی اور دونوں نے ہی ایک دوسرے پر غیرقانونی ہتھیار سے فائرنگ کی۔عمر کا قتل بھگوان اور اس کے ساتھیوں نے کیا۔اسمگلروں سے برآمد کی گئی نمبر پلیٹ بھی ٹوویلرگاڑی کی ہے جس کی جانچ کرلی گئی ہے۔ پولیس کے مطابق مویشیوں کی اسمگلنگ کے معاملے میں طاہر کے خلاف پانچ مقدمے درج ہیں اور وہ فرار چل رہا تھا۔ عمر کے خلاف بھی ایک مقدمہ 2012 میں درج کیا گیا تھا، جس میں وہ فرار چل رہا تھا۔

عمر کا قتل دو جرائم پیشہ گروہوں کے درمیان مارپیٹ اور فائرنگ کا نتیجہ: الور پولیس

عمر خان قتل معاملہ میں گرفتار ملزمین کو الور پولیس نے منگل کے روز عدالت میں پیش کیا۔

دریں اثنا، مقامی سرپنچ جمشید خان نے الور میں عمر کے قتل کے معاملےمیں بقیہ ملزمین کی گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر چوبیس گھنٹے میں مجرموں کو گرفتار نہیں کیا گیا تو اس سلسلے میں تحریک شروع کرنے پر غورکیا جائے گا۔ قابل ذکر ہے کہ اس معاملے میں دو افراد کو گرفتار کیا گیا ہے اور ایک نابالغ سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز