بابری مسجد کیس: ممبئی میں شیعہ برادری نے شیعہ وقف بورڈ کے رُخ کی مذمت کی

Aug 12, 2017 06:21 PM IST | Updated on: Aug 12, 2017 06:21 PM IST

ممبئی۔ بابری مسجد مقدمہ میں حال میں شیعہ وقف بورڈ کے رُخ کی ممبئی میں شیعہ برادری نے سخت الفاظ میں مذمت کی ہے اور الزام عائد کیا ہے کہ یہ بی جے پی حکومت کی خطرناک سازش ہے۔ جوملک میں شیعہ ۔سنی اتحاد کو پارہ پارہ کرنے کے لیے کی گئی ہے۔

آج یہاں مسلم ایسوسی ایشن فار پیس اینڈ ہارمونی کے تحت ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ہم شیعہ وقف بورڈ کے ذریعے سپریم کورٹ میں مبینہ مداخلت کی شدید مذمت کرتے ہیں۔ شیعہ وقف بورڈ نے بابری مسجد کے بجائے کسی اور زمین کو لینے کے بارے میں بات کی ہے جوکہ قابل افسوس امر ہے اور بی جے پی حکومت کے ذریعہ یہ خطرناک سازش کا حصہ لگتی ہے۔

بابری مسجد کیس: ممبئی میں شیعہ برادری نے شیعہ وقف بورڈ کے رُخ کی مذمت کی

بابری مسجد، فائل فوٹو: گیٹی امیجیز

بیان میں کہا گیا ہے کہ بابری مسجد کی شہادت کے معاملے میں، ممبئی کے شیعہ مکمل طور پر اہل سنت والجماعت کے ساتھ ہیں اور ایک ساتھ رہیں گے۔اس طرح کے جھوٹے اور غیر ذمہ دارانہ بیانات اور مداخلت ، مسلمانوں کے اتحاد اور بابری مسجد کے ساتھ انصاف سے ایک دھوکہ دہی ہے۔ ہم، ممبئی کے شیعہ مسلمان کسی بھی جعلی سازشی کے اسکینڈل میں کبھی نہیں آئیں گے، اور ہم اپنے باہمی اتحاد اور انصاف کے لئے اپنے سنی بھائیوں کے ساتھ مل کر رہیں گے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز