بی جے پی کا شیوسینا کے ترجمان اخبارسامنا پر پابندی کا مطالبہ ، ادھو ٹھاکرے نے ایمرجنسی جیسے حالات قرار دیا

Feb 16, 2017 12:10 PM IST | Updated on: Feb 16, 2017 12:10 PM IST

ممبئی : مہاراشٹر میں شیوسینا اور بی جے پی کے درمیان کشیدگی بڑھتی جا رہی ہے۔ بی جے پی کی ترجمان شویتا شالکنی نے الیکشن کمیشن کو خط لکھ کر کہا ہے کہ شیوسینا کے ترجمان اخبار سامنا کو تین دن کے لئے شائع ہونے سے روکا جائے ۔ اس خط کے بعد شیو سینا سربراہ ادھو ٹھاکرے نے کہا یہ ایمرجنسی جیسے حالات ہیں۔

مہاراشٹر میں 16، 20 اور 21 فروری کو بلدیاتی انتخابات ہونے والے ہیں۔ 10 میونسپل اور 25 ضلع کونسل انتخابات میں دونوں ہی پارٹیاں پہلی مرتبہ الگ الگ میدان میں ہیں ۔الیکشن کمیشن کی نئی ہدایات کے تحت کوئی بھی پارٹی الیکشن والے دن کسی اخبار میں اشتہار نہیں شائع کر سکتی، اسی کو بنیاد بنا کر بی جے پی کی ترجمان شویتا شالکنی نے کمیشن کو خط لکھ کر الیکشن والے ان تین دنوں میں شیوسینا کے ترجمان اخبار سامنا کے اشاعت پر روک لگانے کا مطالبہ کیا ہے۔

بی جے پی کا شیوسینا کے ترجمان اخبارسامنا پر پابندی کا مطالبہ ، ادھو ٹھاکرے نے ایمرجنسی جیسے حالات قرار دیا

ادھر ادھو ٹھاکرے نے اس معاملہ پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ سامنا کو بند کرنا کبھی ممکن نہیں ہے۔ پنے میں دیر شام ایک انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے اس کا موازنہ ایمرجنسی سے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ مجھے معلوم پڑا کہ بی جے پی نے الیکشن کمیشن سے شکایت کر کے سامنا پر تین دن کی پابندی کا مطالبہ کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعلی اور وزیر اعظم ان علاقوں میں جا کر انتخابی مہم کیوں کر رہے ہیں ، جہاں انتخابات ہونے ہیں۔ جبکہ ان جگہوں پر ضابطہ اخلاق نافذ ہے۔ انہیں بھی ایسا کرنے سے روکا جانا چاہئے۔ انهوں نے کہا کہ لوگ کہہ رہے ہیں کہ شیوسینا نے مخالف جماعتوں سے ساز باز کر لیا ہے، مگر میں آج کہنا چاہتا ہوں کہ میں نے رابطہ کیا ہے ، لیکن مہاراشٹر کے عوام سے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز