بی جے پی ممبر اسمبلی کی دبنگئی : راجستھان میں 200 سالہ قدیم مسجد کے مرمت کا کام ركوايا

Apr 09, 2017 01:03 PM IST | Updated on: Apr 09, 2017 01:03 PM IST

جے پور : راجستھان کے دیولی میں 200 سالہ قدیم مسجد کی تعمیر نو کے کام کو بی جے پی ممبر اسمبلی نے رکوا دیا ہے۔بتایا جاتا ہے کہ دیولی گاؤں میں 200 سالہ قدیم مسجد میں ارد گرد کے دیہات، اكھاپر، فتح پور، نكھڑی اور دھنا سے مسلمان نماز پڑھنے کیلئے آتے ہیں کیونکہ یہاں کوئی دوسری مسجد نہیں ہے۔

مسجد کافی پرانے ہو گئی تھی ، جس کی وجہ سے دو ماہ قبل اس کو شہید کرکے دوبارہ بنیاد رکھی گئی تھی، لیکن دو دن پہلے بی جے پی ممبر اسمبلی کمل سنگھ ملک اپنے حامیوں کے ساتھ یہاں پہنچے اور انہوں نے مسلمانوں کو تعمیراتی کام روکنے کیلئے کہا۔ انہوں نے کہا کہ اگر انہوں نے انتظامیہ سے تحریری اجازت لی ہے ، تو ہی ان کی تعمیر کی اجازت دے گا۔اس سے پہلے دیہاتیوں نے بھی خبردار کیا تھا کہ تعمیر نو کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

بی جے پی ممبر اسمبلی کی دبنگئی : راجستھان میں 200 سالہ قدیم مسجد کے مرمت کا کام ركوايا

اردو روزنامہ راشٹریہ سہارا میں شائع رپورٹ کے مطابق اتنا ہی نہیں اکثریتی طبقہ سے وابستہ نوجوان دیر رات مسلمانوں کے گھروں کے باہر جمع ہوئے اور جے شری رام کے نعرے لگانے شروع کر دیے۔ اس صورت میں مسلمانوں نے ضلع مجسٹریٹ انل ڈھینگرا سے شکایت درج کرائی ہے۔

ضلع مجسٹریٹ نے پولیس سپرنٹنڈنٹ ستیش چند پانڈے کو واقعہ کی تحقیقات کا حکم دیا ہے۔ تاہم مجسٹریٹ نے مسجد کی تعمیر نو کے بارے میں کوئی حکم نہیں دیا ، فی الحال گاؤں میں حالات کشیدہ ہیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز