ممبئی سمیت دیگر 10شہروں میں پُرامن پولنگ، شہر میں محض 52فیصد ووٹنگ

Feb 21, 2017 11:03 AM IST | Updated on: Feb 21, 2017 08:16 PM IST

ممبئی۔ ہندوستان کے سب سے امیر30ہزارکروڑبجٹ والی ممبئی میونسپل کارپوریشن کے الیکشن میں  آج یہاں 52فیصد رائے دہندگان نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا جبکہ تھانے ،پونے ،ناگپور،الہاس نگر ،سولاپور سمیت 10میونسپلٹی انتخابات کے ووٹ ڈالے گئے اورایک کروڑ سے زائد رائے ہندگان نے امیدواروں کی قسمت کو مشینوں نے بندکردیا ہے اوراب انہیں نتائج کے لیے جمعرات 23فروری تک انتظار کرنا ہوگا۔عروس البلاد میں اس مرتبہ 6-7فیصد ووٹنگ میں اضافہ ہوا ہے۔ ممبئی میں منگل کو ہونے والے میونسپل کارپوریشن کے الیکشن کے لیے ریاستی الیکشن کمیشن کے ساتھ ساتھ پولیس نے بھی سخت حفاظتی انتظامات کیے تھے اور کسی بھی مقام سے ناخوشگوار واقعہ کی کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی ہے۔ سابق وزیراعلیٰ شردپوار ،شیوسینا سربراہ ادھوٹھاکرے ،ایم این ایس چیف راج ٹھاکرے ،فلم اداکار شاہ رخ خان،ریکھا،سبھاش گھئی ،گلزار سمیت متعدد سیاسی ،سماجی اور فلمی شخصیات نے حق رائے دہی کا استعمال کیا ،مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ دیویندر فڑنویس نے ناگپورمیں میونسپل الیکشن کے پیش نظر اپنی اہلیہ کے ساتھ ووٹ دیا اور دعویٰ کیا کہ ممبئی ،ناگپورسمیت دیگر شہروں میں بی جے پی کو بھاری اکثریت حاصل ہورہی ہے۔

ممبئی میونسپل کارپوریشن کی227نشستوں کے لیے تقریباً ڈھائی ہزار امیدوارمیدان میں تھے۔ممبئی سمیت دیگر شہروں کی کارپوریشن اور ضلع پریشد کے انتخابات کو بی جے پی کی دیویندرفڑنویس سرکار کی دوسالہ حکومت کے لیے ریفرنڈم سمجھا جارہا ہے۔ چاروں بڑی پارٹیوں کانگریس،بی جے پی ،شیوسینا اور این سی پی نے اس مرتبہ اکیلے ہی الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا تھا۔ سبھی کی نظریں 2019میں ہونے و الے اسمبلی الیکشن پر ہیں۔اس بار راج ٹھاکرے کی ایم این ایس اپنی سیاسی ساکھ بنانے میں لگی ہے اور اے آئی ایم آئی ایم بھی اپنی سیاسی بنیاد بنانے میں لگی رہی۔ 23فروری جمعرات کو ووٹوں کی گنتی ہوگی اور نتائج کا اعلان کیا جائے گا۔اس موقع پر مسلم عمائدین ،علماء کرام اور مسلم تنظیموں نے رائے دہندگان سے ابتدائی گھنٹوں میں ووٹ دینے کی اپیل کی تھی ،دوپہر تک شہر میں ووٹنگ کا فیصد کم رہا ،لیکن شام تک اس میں اضافہ ہوا اور2012کے بعد فیصد میں 6-7فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔بتایا جارہا ہے کہ جنوبی ممبئی مسلم اکثریتی علاقوں میں اس مرتبہ پولنگ میں اضافہ ہوا ہے۔

ممبئی سمیت دیگر 10شہروں میں پُرامن پولنگ، شہر میں محض 52فیصد ووٹنگ

واضح رہے کہ ممبئی میں 2012کے مقابلے میں 6-7فیصدووٹنگ میں اضافہ ہوا ہے اورکئی دہائی بعدفیصد میں بہتر ی آئی ہے۔پڑوسی شہر تھانے میں 53.11فیصد،الہاس نگر میں 46.83یصد،پونے میں49.52فیصد،پمپری ۔چنچوڑ51.8فیصد،ناسک52.63فیصد،ناگپور49.95فیصد،شولا پور44فیصد،امراوتی51.62فیصد،اکولہ 42.39فیصدرہا۔ شہر میں 20سے زائد علاقوں کو حساس قراردیا گیا تھا اور احتیاط کے طورپر 1500افراد کو حراست میں لے لیا اور پُرامن پولنگ کے لیے سریع الحرکت فورس (آراے ایف) اور رائٹ کنٹرول یونٹ واسپیشل کمانڈوز کو تعینات کردیا گیا ۔ تقریباً92لاکھ رائے دہندگان تھے جن میں سے 52.11فیصد نے ووٹ دیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز