سینٹرل حج کمیٹی نے دیا نئی حج پالیسی کی کئی سفارشات سے عدم اتفاق کا اشارہ

Oct 13, 2017 08:46 PM IST | Updated on: Oct 13, 2017 08:46 PM IST

ممبئی۔ نئی حج پالیسی کے جائزے کے بعد مرکزی حج کمیٹی نے عدم اتفاق کا اظہار کیا اور اس تعلق سے نئی دہلی میں مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور سے ملاقات کرکے احتجاج درج کرایا جائے گا ،اس کا اعلان مرکزی حج کمیٹی کے چیئرمین محبوب علی قیصرنے آج یہاں جائزہ میٹنگ کے بعد ایک پریس کانفرنس میں کیا ۔کمیٹی نے نئی پالیسی میں نافذ کردہ کئی سفارشات کو نامنظور کردیا ہے۔ محبوب علی قیصر نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملک بھر میں 21امبارکیشن پوائنٹس کو کم کرکے 9کیے جانے کی سفارش سے ممبران کی اکثریت سے عدم اتفاق کیا جبکہ 70 سال سے زیادہ عمرکے عازمین حج کا کوٹہ ختم نہیں کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے،کیونکہ زندگی کی مصروفیات کے بعد خود کو مختلف ذمہ داریوں اور فرائض کی ادائیگی کے بعد مذکورہ عمر میں حج کے لیے لوگ تیاری کرتے ہیں ،اور اس کوٹہ کو ختم کرنا ان کی حق تلفی ہوگی۔

انہوں نے مزید کہا کہ ممبران کی خواہش ہے کہ مرکزی حکومت حج سبسڈی ختم نہ کرے اور ان کا نعم البدل تلاش کیا جائے تاکہ عام مسلمان اس فریضہ سے محروم نہ ہوجائے۔ چیئرمین نے کہا کہ آج کی میٹنگ میں پی ٹی او کا کوٹہ بڑھانے کی مخالفت کی گئی ہے۔جبکہ سعودی حکومت کو اعتماد میں لیکرایئرلائنس کے سلسلے میں گلوبل ٹینڈر طلب کیے جائیں گے۔اس کے ساتھ مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا جائے گا کہ دوران حج قربانی کیلئے  کوپن کو لازمی نہیں کیا جانا چاہئے۔ممبران کی اکثریت نے گرین کٹیگری کی کو ختم کرنے کی مخالفت کی ہے اور اس سے وزیرموصوف کو مطلع کردیا جائے گا۔

سینٹرل حج کمیٹی نے دیا نئی حج پالیسی کی کئی سفارشات سے عدم اتفاق کا اشارہ

مرکزی حج کمیٹی کے چیئرمین محبوب علی قیصر: فائل فوٹو

چیئرمین محبوب علی قیصر نے واضح طورپراعلان کیا کہ مرکزی وزیر مختار عباس نقوی سے ملاقات کے دوران 45 سال سے زیادہ عمر کی خاتون کا بغیر محرم کے حج پر جانے کا معاملہ بھی اٹھایا جائے گا اور یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ بغیر محرم کے حج پر جانے کا معاملہ اختیاری ہونا چاہئے،لیکن مرکزی حج کمیٹی اس معاملے میں محتاط رویہ اختیار کرے گی ۔کیونکہ جو مسالک خواتین کو بغیر محرم کے سفر حج پر جانے کی اجازت دیتے ہیں۔ اس مسلک کی خواتین کو بغیر محرم کے حج پر روانگی پر اعتراض نہیں ہوگا تو انہیں جانے کی اجازت دی جائے گی۔ 45 سال سے زیادہ عمر کی خواتین حج پر روانہ ہونا چاہے تو اپنی مرضی سے چار کے گروپ میں حج پر روانہ ہوسکتی ہے۔ حج کمیٹی کا کہنا ہے کہ محرم کے بغیرحج پر جانے کے فیصلے کو اختیاری رکھاجائے۔اورحج کمیٹی نے بغیر محرم کے حج پر روانہ ہونے کا پورا معاملہ خواتین پر چھوڑدیا ہے۔

محبوب علی قیصر کے مطابق ان امور پر تبادلہ خیال کرنے اور اپنا موقف پیش کرنے کے لیے ہفتہ کو مرکزی حج کا وفد مختار عباس نقوی سے ملاقات کرکے نئی پالیسی کی سفارشات کے متعلق حج کمیٹی کے صدر واراکین کی رائے سے حکومت کو مطلع کیا جائیگا۔مرکزی حج کمیٹی کا وفد سنیچرصبح گیارہ بجے وزیربرائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی سے ملاقات کرے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز