کانگریس کی جانب سے شیوسینا کی حمایت کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا: نسیم خان

Feb 25, 2017 07:01 PM IST | Updated on: Feb 25, 2017 07:02 PM IST

ممبئی۔ مہاراشٹرپردیش کانگریس کمیٹی کے نائب صدر اوراقلیتی امور کے سابق وزیر محمد عارف نسیم خان نے آج یہاں ممبئی میونسپل کارپوریشن میں کانگریس کی جانب سے شیوسینا کی حمایت کئے جانے کی خبروں کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ اترپردیش الیکشن کے پیشِ نظر بی جے پی اورآر ایس ایس کی جانب سے پھیلائی جانے والی ایک افواہ ہے۔ کانگریس ہمیشہ فرقہ پرست طاقتوں اورفرقہ پرستوں سے برسرِ پیکار رہی ہے، ریاست کے کسی بھی حصے میں کسی بھی فرقہ پرست پارٹی کی کسی بھی قیمت پر حمایت کا سوال ہی نہیں پیدا ہوتا۔ واضح رہے کہ گزشتہ کل انتخابی جائزے کے لئے مہاراشٹر کانگریس کے اعلیٰ لیڈران کی ایک میٹنگ ہوئی تھی، جس میں مہاراشٹر پردیش کے صدراورسابق وزیراعلیٰ اشوک چوہان، سابق ریاستی صدر مانک راو  ٹھاکرے، سابق وزیراعلیٰ نرائن رانے، ممبئی کانگریس کے صدر سنجئے نروپم اور محمد عارف نسیم خان موجودتھے ، جس کے فوری بعد میڈیا میں یہ خبر چل پڑی کہ ممبئی میونسپل کارپوریشن میں میئر کے عہدے کے لئے کانگریس شیوسینا کی حمایت کرسکتی ہے اور اس کے بدلے میں شیوسینا نے کانگریس کو ڈپٹی میئر کاعہدہ دینے کی پیشکش کی ہے۔ اس خبر کے منظرِ عام پر آنے سے کانگریسی حلقوں میں بے چینی کی لہرہے۔

عارف نسیم خان نے مزید کہا کہ کانگریس کی پوری تاریخ فرقہ پرستی کے خلاف لڑائی سے عبارت ہے، ہمارے نوجوان لیڈر راہل گاندھی آر ایس ایس کو مہاتما گاندھی کا قاتل قراردیتے ہیں، جس کا مقدمہ بھیونڈی کی عدالت میں جاری ہے۔ کانگریس ایک سیکولر پارٹی ہے اور سیکولرازم کی بنیاد پر ہی اس کے فیصلے ہوتے ہیں۔ ایسی صورت میں یہ ممکن ہی نہیں ہے کہ کانگریس کسی فرقہ پرست پارٹی کی حمایت کرے۔ انہوں نے کہا کہ جس میٹنگ کے بعد مذکورہ افواہ میڈیا میں آئی، اس میٹنگ میں میں بھی موجود تھا اور اس میں ضلع پریشد میں این سی پی کی حمایت کا فیصلہ ہوا ہے جبکہ شیوسینا کی حمایت کا کوئی بھی فیصلہ نہیں ہوا۔ اس کے باوجود میڈیا میں یہ خبر آئی کہ کانگریس شیوسینا کی حمایت کرسکتی ہے۔ یہ سراسر ایک افواہ ہے اور اس کی کوئی حقیقت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کی افواہ آر ایس ایس اور بی جے پی کی جانب سے پھیلائی گئی ہے تاکہ اس کا فائدہ اترپردیش کے الیکشن میں اٹھایا جاسکے جہاں تمام طبقوں کے سیکولر رائے دہندگان میں کانگریس پہلی پسند بنی ہوئی ہے۔ فرقہ پرست پارٹیاں اس طرح کی افواہ پھیلا کر عام سیکولر لوگوں کو کانگریس سے بدظن کرنا چاہتی ہیں لیکن ان کی سازش کبھی کامیاب نہیں ہوگی۔

کانگریس کی جانب سے شیوسینا کی حمایت کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا: نسیم خان

عارف نسیم خان نے مزید کہا کہ کانگریس سیکولر پارٹیوں سے اتحاد توکرسکتی ہے، مگر کسی فرقہ پرست پارٹی کی حمایت تو دور اس پر غور بھی نہیں کرسکتی۔ ہم سیکولرازم کی بنیاد پر عوام کے درمیان جاتے ہیں اور اس پر قائم رہتے ہیں۔ اب اگر کوئی فرقہ پرست پارٹی یہ چاہتی ہے کہ ہم اس کی حمایت کریں تو یہ اس کی خام خیالی ہوگی۔ ہماری لڑائی ہمیشہ سے فرقہ پرستی سے رہی ہے، ہم کسی بھی قیمت پر نہ کسی فرقہ پرست پارٹی سے حمایت لے سکتے ہیں اور نہ ہی اسے دے سکتے ہیں۔ ہم اپنے اصول پر سختی سے کاربند ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز