ناندیڑ میونسپل کارپوریشن الیکشن میں کانگریس کی بڑی جیت، 81 میں 71 سیٹوں پر قابض 

Oct 12, 2017 07:38 PM IST | Updated on: Oct 12, 2017 09:01 PM IST

ممبئی۔ مہاراشٹر کے مراٹھوارہ خطہ میں واقع مشہور ناندیڑ۔واگھالامیونسپل کارپوریشن الیکشن میں کانگریس کی شاندار کامیابی کے بعد بی جے پی لیڈرشپ کے ’’کانگریس مکت بھارت ‘‘ نعرے کو شکست ہوتی نظرآ رہی ہے اور بی جے پی کوحیرت زدہ کردیا ہے کیونکہ کانگریس نے انتخابات میں 81نشستوں والی کارپوریشن میں سے 71پر قبضہ کرلیا ہے، جبکہ بی جے پی 5، شیوسینا نے 1 سیٹیں حاصل کی ہیں۔ بقیہ سیٹیں آزاد امیدواروں کی جھولی میں گئی ہیں جبکہ مجلس اتحاد المسلمین کا بری طرح سے صفایا ہو گیا ہے۔  سابق وزیراعلیٰ اور ایم پی سی سی کے صدر اشوک چوان کے آبائی وطن میں شاندار کامیابی کے بعد مبارکباد کا سلسلہ جاری ہے۔جہاں سے وہ کانگریس کے واحد ایم پی ہیں۔

گزشتہ روز ہونے والی الیکشن میں 60فیصد ووٹ ڈالے گئے اور بی جے پی نے ناندیڑ کارپوریشن کو حاصل کرنے کے لیے ایڑی چوٹی کا زور لگا دیا تھا ،کیونکہ ریاستی وزیراعلیٰ دیویندرفرنویس سمیت اعلیٰ بی جے پی لیڈران یہاں انتخابی مہم میں حصہ لینے پہنچے اور یہی وجہ ہے کہ کانگریس کو بھی آخری دورمیں کانگریس نائب صدر راہل گاندھی کو مدعوکرنا پڑا۔

ناندیڑ میونسپل کارپوریشن الیکشن میں کانگریس کی بڑی جیت، 81 میں 71 سیٹوں پر قابض 

کانگریس لیڈر اشوک چوان: فائل فوٹو۔

واضح رہے کہ ناندیڑ ہمیشہ سے کانگریس کا گڑھ رہا ہے ،گزشتہ انتخابات میں کانگریس نے 81نشستوں میں سے 41پر فتح حاصل کی تھی ،شیوسینا کے 12اور پہلی بار آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین نے 11 سیٹیں اور بی جے کو صرف دوپر اکتفا کرنا پڑا تھا اور اس نے یہاں پارٹی کو مضبوط کرنے کے لیے ایڑی چوٹی کا زور لگا دیا تھا ۔ بی جے پی نے 2014کے اسمبلی الیکشن میں شاندار کامیابی حاصل کرنے کے بعد متعدد کارپوریشن اور ضلع اور نگر پریشد کے انتخابات میں کامیابی حاصل کی ہے ،لیکن ناندیڑ نے بی جے پی کو آئینہ دکھا دیا ہے۔ دراصل وزیراعلیٰ فرنویس نے مہم کی کمان اپنے ہاتھوں میں رکھی تھی اور وہ جلسوں میں شیوسینا کو بی جے پی کی ’بی ‘ٹیم قراردیتے رہے تھے۔بی جے پی کے ساتھ ساتھ ایم آئی ایم اور این سی پی کے لیے الیکشن نتائج دھچکہ ہیں کیونکہ این سی پی اور ایم آئی ایم کو ایک بھی نشست ہاتھ نہیں لگی ہے ،البتہ شیوسینا اور بی جے پی کو ایک ۔ایک نشست ملی ہیں اور ایک ۔ایک پر وہ آگے ہیں۔

اشوک چوان نے ایک بیان میں کہا کہ ’’اچھے دن کے جھوٹے وعدے ‘‘سے ووٹر تنگ آچکے ہیں اور وہ صحیح معنوں میں ترقی چاہتے ہیں۔ ناندیڑ میں پہلی بار الیکشن کمیشن نے ووٹر ویریفائبل پیپر ٹرائل (وی وی پی اے ٹی) مشینوں کا استعمال کیا ہے ،جس میں ووٹ دینے کے بارے میں ووٹر کو تصدیق نامہ مل جاتا ہے۔ فی الحال چند مشینوں میں ٹیکنیکل نقص کے بعد ہٹا لیا گیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز