بی ایم سی انتخابات میں کسی کو اکثریت نہیں، شیوسینا 84 تو بی جے پی 81 سیٹوں پر آگے

شیوسینا ممبئی میونسپل کارپوریشن میں اکثریت کے جادوئی نمبر 114 سے محض 29 سیٹ دور ہے۔

Feb 23, 2017 10:47 AM IST | Updated on: Feb 23, 2017 05:43 PM IST

ممبئی : بی ایم سی انتخابات میں شیوسینا نمبر ایک کی پارٹی بن کر ابھرتی ہوئی نظر آرہی ہے۔ شیوسینا اب آمچي ممبئی شان سے کہہ سکتی ہے ۔ وہیں بی جے پی کے لیے بھی اچھی خبر ہے۔ بی ایم سی کی 227 سیٹوں میں 81سیٹوں پر بی جے پی آگے چل رہی ہے۔ اس کے علاوہ 10 اضلاع کے میونسپل انتخابات میں بی جے پی 8 پر برتری بنائے ہوئے ہے۔ بی ایم سی انتخابات میں کسی کو اکثریت نہیں ملتی نظر آرہی ہے۔ شیوسینا جہاں 84 نشستوں پر تو بی جے پی 81 سیٹوں پر آگے چل رہی ہے۔

مہاراشٹر میں 10 میونسپل کارپوریشن انتخابات میں سات میں بی جے پی جیت کی راہ پر گامزن ہے۔ تین میونسپل کارپوریشن میں کانٹے کی ٹکر ہے۔ تھانے میں جہاں شیوسینا آگے ہے ، تو پمپری اور چچوڈ میں این سی پی اور بی جے پی کے درمیان جنگ جاری ہے۔ ممبئی میں شیو سینا اور بی جے پی میں محض 3 سیٹوں کا فرق ہے۔ یہاں بی جے پی نے میئر کے عہدے کا دعوی کر دیا ہے۔

بی ایم سی انتخابات میں کسی کو اکثریت نہیں، شیوسینا 84 تو بی جے پی 81 سیٹوں پر آگے

مہاراشٹر میں سنجے نروپم کے بعد پنکجا منڈے نے بھی استعفی کی پیشکش کر دی ہے۔ پرلی کے ضلع کونسل انتخابات میں شکست کی ذمہ داری لیتے ہوئے پنکجا وزیر اعلی فڑنویس کو استعفی سونیپیں گی ۔ پرلی منڈے کنبہ کا گڑھ ہے، لیکن یہاں این سی پی کے ہاتھوں کراری شکست بی جے پی کو ملی ہے۔ پرلی میں صحافیوں سے بات چیت میں پنکجا نے استعفی دینے کی بات کہی ہے۔

اس کے علاوہ دیگر 9 میونسپل انتخابات کے نتائج آ رہے ہیں۔ اب تک آ رہے رجحانات میں سب سے زیادہ نقصان کانگریس اور این سی پی کو ہوتا نظر آرہا ہے۔ بی جے پی اور شیو سینا نہ صرف اپنے دفاع کو بچانے میں کامیاب ہوتی دکھائی دے رہی ہے ، بلکہ کانگریس، این سی پی اور ایم این ایس کے گڑھ میں بھی نقب زنی کرتی بھی نظر آرہی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز