ممبئی انٹرنیشنل ایئر پورٹ پر نماز ادا کرنے کو لے کر تنازع

Jul 09, 2017 10:53 AM IST | Updated on: Jul 09, 2017 10:54 AM IST

ممبئی : ممبئی انٹرنیشنل ایئر پورٹ پر ہفتہ کو دیر رات نماز ادا کرنے کو لے کر تنازع  ہو گیا ۔ دراصل کچھ مسلم مسافر ایئر پورٹ پر گینگ وے میں  بیچ راستے پر ہی نماز پڑھنے لگے ، جس پر کچھ مسافروں نے احتجاج کیا ۔ نماز ادا کرنے والے مسافروں کے پاس سی آئی ایس ایف کے جوان تعینات تھے اور وہ دوسرے مسافروں کو نمازی مسافروں سے دور ہو کر آنے جانے کے لئے کہہ رہے تھے ۔

این ڈی ٹی وی کی خبر کے مطابق ونیت گوینکا نام کے ایک مسافر نے اس پر اعتراض کیا  ۔ گوینکا کا الزام ہے کہ وہاں پر تعینات سی آئی ایس ایف کے جوان ایچ ایس راوت نے ان کے ساتھ بدتمیزی کی ۔ انہوں نے کہا کہ ایئر پورٹ پر جب نماز ادا کرنے کے لئے الگ الگ کمرے کا بندوبست تو کسی کو بیچ راستے میں نماز ادا کرنے کیوں دے رہے ہو؟ اگر انہیں اجازت دے رہے ہو تو مجھے بھی عبادت کی اجازت دو؟۔

ممبئی انٹرنیشنل ایئر پورٹ پر نماز ادا کرنے کو لے کر تنازع

گوینکا کا یہ بھی الزام ہے کہ سی آئی ایس ایف جوان نے ان کے ساتھ بد تمیزی کی ۔ اس کے بعد گوینکا نے ایئر پورٹ پر مظاہرہ شروع کردیا ۔ گوینکا اپنی بیوی کے ساتھ تھے ۔ ونیت کا الزام ہے کہ اس کی بیوی نے جب دھرنا کی تصویر کو کیمرے میں قید کرنی چاہی ، تو جوان نے کیمرے چھیننے کی کوشش کی ۔

گوینکا نے اس خلاف مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کو خط بھِی لکھا ہے ۔  ساتھ ہی ساتھ سی آئی ایس ایف کے مقامی سربراہ کو بھی شکایتی درخواست دی ہے ۔ حالانکہ ابھی تک سی آئی ایس ایف کا موقف سامنے نہیں آیا ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز