احمد آباد کے وٹوا علاقے میں طلاق کے نام پر معصوم بچیوں کی زندگی کے ساتھ کھلواڑ

Apr 25, 2017 06:38 PM IST | Updated on: Apr 25, 2017 06:38 PM IST

احمد آباد۔ جہاں ایک طرف تین طلاق کا مسئلہ پورے ہندوستان میں بحث کا موضوع  بنا ہوا ہے اور حکومت کی اس معاملے میں مداخلت کے بعد مسلمانوں کے تمام مسلکوں سے وابستہ لوگ متحد ہو کر حکومت کے اس فیصلے کی مخالفت کر رہے ہیں۔ وہیں دوسری طرف کچھ مسلمان طلاق کا ناجائز طریقے سے استعمال کر پوری قوم کو بدنام اور شرمندہ کر رہے ہیں ۔  احمد آباد کے وٹوا علاقے میں رہنے والی دو لڑکیاں طلاق کے نام سے آج کانپ رہی ہیں ۔

اس علاقے میں رہنے والے ایک نوجوان نے ایک نہیں بلکہ دو دو لڑکیوں کو طلاق کا شکار بنا چکا ہے اوراب وہ خود تیسری شادی کرزندگی گزار رہا ہے ۔ ایسا لگتا ہے کہ اس نے شادی اور طلاق کو کھیل بنا رکھا ہے ۔ احمد آباد کے وٹوا میں رہنے والے اعجاز ( بدلا ہوا نام ) پر الزام ہے کہ وہ من پسند لڑکیوں کو سب سے پہلے اپنی جال میں پھنساتا ہے اور پھر شادی کرتا ہے  اور جب یہ لڑکیاں حاملہ ہو جاتی ہیں تو وہ لڑکیوں کو طلاق دیتے ہوئے کہتا ہے کہ مسلمانوں میں طلاق دینا جائز ہے ۔

احمد آباد کے وٹوا علاقے میں طلاق کے نام پر معصوم بچیوں کی زندگی کے ساتھ کھلواڑ

اعجاز کے جال میں سب سے پہلے پھنسی 16 سال کی سمیہ بانو۔ نابالغ ہونے کے باوجود اعجاز کے گھر والوں نے دھونس دھمکی دے کر سمیہ سے زبردستی شادی کرنے پرمجبور کر دیا ۔ ان دونوں کی شادی ہوئی لیکن کسی کو یہ نہ معلوم تھا کہ شادی کی خوشی صرف دو ماہ تک ہی رہنے والی ہے ۔ اعجاز نے سمیہ کو دو مہینہ ساتھ میں رکھنے کے بعد طلاق دے دیا ۔ آج بھی سمیہ شادی کے اس دو ماہ کے وقت کو یاد کررہی ہے ۔

talaq

سمیہ کو اس گہرے صدمے سے نکالنے کے لئے اس کی ماں نے اپنے کسی رشتہ دار کے یہاں اسے بھیج دیا ہے۔  یتیم سمیہ خاندان کی اکیلی لڑکی تھی لیکن شادی کے بعد ملنے والے طلاق سے پورے خاندان میں غم کا ماحول ہے ۔ سمیہ کی والدہ اپنی لڑکی کو انصاف دلوانے کے لئے کوشش کر رہی ہے لیکن آئے دن اعجاز اور اس کی والدہ  کسی  بدمعاش ڈان کے نام کا حوالہ دے کر اسے جان سے مارنے کی دھمکی دے رہے ہیں ۔ جہاں ایک طرف پورے ہندوستان میں طلاق کا مسئلہ بحث کا موضوع بنا ہوا ہے وہیں،  اعجاز جیسے کچھ نام کے مسلمان طلاق کے ساتھ جس طریقے سے کھلواڑ کر رہے ہیں اسے روکنا بیحد ضروری ہو گیا ہے ۔ فی الحال اعجاز تیسری شادی کر زندگی گزار رہا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز