چشم دید کی زبانی : کملا ملس میں لوگ نہیں ، بس آگ ہی آگ نظر آرہی تھی

ممبئی کے کملا ملس کمپاونڈ میں گزشتہ رات ایک ریسٹورینٹ میں بھیانک آگ لگنے سے 14 افراد کی موت ہوگئی جبکہ درجن بھر لوگ سنگین طور پر زخمی ہوگئے ۔

Dec 29, 2017 02:51 PM IST | Updated on: Dec 29, 2017 02:57 PM IST

ممبئی : ممبئی کے کملا ملس کمپاونڈ میں گزشتہ رات ایک ریسٹورینٹ میں بھیانک آگ لگنے سے 14 افراد کی موت ہوگئی جبکہ درجن بھر لوگ سنگین طور پر زخمی ہوگئے ۔ زخمیوں کو کے ای ایم اور بریچ کینڈی اسپتال میں داخل کرایا گی اہے ۔ عینی شاہدین نے حادثہ کو انتہائی بھیانک قرار دیا ہے ۔ عینی شاہدین کے مطابق چند سکینڈ میں ہی آگ نے پورے ریسٹوینٹ کو اپنی زد میں لیا اور اس کے بعد وہاں انسان نہیں بلکہ صرف آگ ہی آگ نظر آرہی تھی۔

حادثہ کے وقت وہاں موجود ڈاکٹر سلبھ نے اس آتشزدگی کی تفصیلاب بیان کی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ہم کچھ دوستوں کے ساتھ ریسٹورینٹ میں ڈنر کرنے گئے تھے ۔ تقریبا 12 سے 12.15 بجے کا وقت تھا ، تبھی ریسٹورینٹ کے ایک کونے میں آگ لگ گئی ۔ اس آگ نے پانچ سے 10 سکینڈ میں ہی پورے ریستوراں کو اپنی زد میں لیا ، اس کے بعد وہاں بھگدڑ مچ گئی اور لوگ اپنی جان بچانے کیلئے بھاگنے لگے ۔

چشم دید کی زبانی : کملا ملس میں لوگ نہیں ، بس آگ ہی آگ نظر آرہی تھی

ڈاکٹر سلبھ کے مطابق ریستوراں میں داخلہ گیٹ انتہائی چھوٹا تھا ۔ سبھی لوگ جان بچانے کیلئے اس گیٹ کی جانب دوڑ پڑے ۔

ڈاکٹر سلبھ کے مطابق ریستوراں میں داخلہ گیٹ انتہائی چھوٹا تھا ۔ سبھی لوگ جان بچانے کیلئے اس گیٹ کی جانب دوڑ پڑے ۔ اس دوان بھگدڑ مچ گئی اور کئی لوگ دب گئے ۔ کچن کے راستے سے پیچھے سے نکلنے کا دروازہ تھا ۔ لوگوں کو تو اندازہ بھی نہیں تھا کہ کدھر نکلنے کا دروازہ ہے ۔ تقریبا 100 ، 150 افراد وہاں موجود تھے ، جب یہ حادثہ پیش آیا تو ریستوراں کے ملازمین نے لوگوں کی کافی مدد کی ۔ کچھ لوگ جان بچانے کیلئے واش روم میں چھپ گئے ، لیکن بعد میں پتہ چلا کہ وہ زندہ نہیں بچ سکے۔

حادثہ کے ایک دیگر چشم دید وجے ترپاٹھی نے بتایا کہ آگ بہت بھیانک تھی ۔ دیکھتے ہی دیکھتے آگ نے پورے ریستوراں کو اپنی زد میں لے لیا ۔ بھگدڑ مچ گئی ، اس کے بعد وہاں آگ کے علاوہ کچھ نہیں نظر آرہا تھا ۔ ایسا لگ رہا تھا جیسے آتش بازی ہورہی ہو ، دھماکوں جیسی آوازیں آرہی تھیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز