مہاراشٹر میں قرض معافی کے اعلان کے بعد بھی نہیں رک رہیکسانوں کی خودکشی

Jun 28, 2017 07:47 PM IST | Updated on: Jun 28, 2017 07:47 PM IST

اورنگ آباد: وزیر اعلی دیویندر فڑنویس کے 34 ہزار کروڑ روپئے کےکسانوں کی قرض معافی کے اعلان کے بعد بھی کسانوں کی خودکشی کےواقعات رک نہیں رہےہیں۔ ڈویژنل کمشنر کے دفتر کے مطابق گزشتہ ہفتہ مراٹھ واڑہ علاقہ میں 19کسانوں نےخودکشی کرلی۔ یکم جنوری سے 24 جون تک کُل 445 کسانوں نے خودکشی کی ہے جبکہ گزشتہ ہفتہ یہ تعداد 426 تھی۔

بیڈ ضلع سب سے زیادہ متاثر ہے۔ یہاں پر 86 کسانوں نے خودکشی کی ہے اور ہنگولی ضلع میں سب سے کم 25 کسانوں نے خودکشی کی ہے۔ ندیڈ میں 74، عثمان آباد میں 68، اورنگ آباد میں 62، پربھنی میں 57، جالنا میں 39 اور لاتور میں 34 کسانوں نے خودکشی کی ہے۔

مہاراشٹر میں قرض معافی کے اعلان کے بعد بھی نہیں رک رہیکسانوں کی خودکشی

خودکشی کے 445 معاملوں میں سے 265 کو امداد کے قابل پایا گیا اور 249 معاملوں میں مرنے والوں کے گھروالوں کو امدادی رقم وغیرہ دی گئی۔ انتظامیہ نے 59 معاملوں کو خارج کردیا جبکہ 121 معاملے ابھی جانچ کیلئے زیر التوا ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز