Live Results Assembly Elections 2018

گجرات انتخابات : کانگریس کی شکست میں کپل سبل اور منی شنکر ائیر نے بھی نبھایا اہم رول ، اور پھر پلٹ گئی بازی

گجرات اسمبلی انتخابات میں کانگریس کی شکست کے جہاں کئی فیکٹر ہیں ، وہیں ان میں دو فیکٹر ایسے بھی ہیں ، جس نے پارٹی کا عین وقت پر بنتے بنتے کھیل بگاڑ دیا ۔

Dec 18, 2017 05:51 PM IST | Updated on: Dec 18, 2017 05:51 PM IST

احمد آباد : گجرات اسمبلی انتخابات میں کانگریس کی شکست کے جہاں کئی فیکٹر ہیں ، وہیں ان میں دو فیکٹر ایسے بھی ہیں ، جس نے پارٹی کا عین وقت پر بنتے بنتے کھیل بگاڑ دیا ۔ گجرات میں ایک وقت ایسا بھی تھا جب ساری چیزیں کانگریس کے حق میں جاتی ہوئی نظر آرہی تھیں  اور سیاسی پنڈت بھی کچھ بھی پیشین گوئی کرنے سے گریز کررہے تھے ، مگر پھر سب کچھ اچانک تبدیل ہوگیا اور بی جے پی چھٹی مرتبہ اقتدار پر اپنا قبضہ برقرار رکھنے میں کامیاب ہوگئی ۔

ریاست میں 22 سالہ اقتدار کی وجہ سے اس مرتبہ بی جے پی کے خلاف جہاں دیگر کئی ساری باتیں تھیں وہیں جی ایس ٹی کی وجہ سے تاجروں کو ہونے والی پریشانیاں بھی ایک اہم بات تھی ۔ مگر اس سب پر کانگریس لیڈروں کی دو بھول بھاری پڑ گئی اور پارٹی کو شکست کی شکل میں اس کا خمیازہ بھگتنا پڑا ۔ یہ دونوں بھول بھی الیکشن سے کافی پہلے نہیں بلکہ عین وقت پر کی گئیں ۔ پہلی بھول پہلے مرحلہ کی پولنگ سے عین قبل اور دوسری بھول دوسرے مرحلہ کی ووٹنگ سے عین قبل ۔

گجرات انتخابات : کانگریس کی شکست میں کپل سبل اور منی شنکر ائیر نے بھی نبھایا اہم رول ، اور پھر پلٹ گئی بازی

پہلی بھول کانگریس لیڈر کپل سبل نے کی ، جس نے انتخابی مہم کے رخ کو ہی موڑ کر رکھ دیا اور وزیر اعظم مودی اور بی جے پی نے جم کر اس کا استعمال کیا ۔ بابری مسجد - رام جنم بھومی کی سماعت کے دوران کبل سبل کا 2019 لوک سبھا انتخابات کے بعد سماعت کرنے کی اپیل کرنا بی جے پی کو نئی زندگی دے گیا ۔ ترقی اور جی ایس ٹی کے نام پر ریاست میں گھر رہی بی جے پی نے اس کو فوری طور پر لپک لیا اور پھر اس کو مذہبی رنگ دے کر کانگریس پر حملے شدید کردئے ۔

سیاسی جانکاروں کی مانیں تو ان کا کہنا ہے کہ گجرات کے شہری علاقوں اور پٹیل برادری میں پہلے تو جی ایس ٹی کو لے کر بی جے پی سے ناراضگی تھی ، مگر جب رام مندر کا معاملہ سامنے آیا تو اس نے اپنی ناراضگی کو پیچھے رکھ دی اور بی جے پی کو اس کا بھرپور فائدہ مل گیا ۔ یہی وجہ ہے کہ پٹیل اکثریتی علاقوں میں بھی پارٹی کافی اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے میں کامیاب رہی جبکہ نوجوان لیڈر ہاردک پٹیل نے بی جے پی کو نقصان پہنچانے کی بھرپور کی کوشش ۔

Loading...

دوسری بھول منی شنکر ائیر نے کی ، جس نے بھی کانگریس کی ہار میں اہم رول ادا کیا۔ منی شنکر ائیر کے ذریعہ وزیر اعظم مودی کو نیچ کہنا بی جے پی کیلئے کسی کی سنجیونی سے کم نہیں تھا ، جس کو وزیر اعظم مودی خود بھی جانتے تھے ۔ یہی وجہ سے ہے کہ ائیر کا بیان آتے ہی وزیر اعظم اور بی جے پی نے اس کو بھنانا شروع کردیا اور گجرات کی اسمتا کا سوال قرار دیتے ہوئے انتخابی ریلیوں میں اس کو اپنا ہتھیار بنالیا اور دوسرے مرحلہ کی پولنگ میں اس کا بھرپور فائدہ بھی ملا ۔ وزیر اعظم مودی ، صدر امت شاہ اور بی جے پی نے اس کو گجرات کی بے عزتی قرار دے کر لوگوں کو اپنی حق میں کر لیا ۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز