نرودا پاٹیہ میں واردات کے دن ایوان اسمبلی میں تھیں مایا کوڈنانی، عدالت میں امت شاہ کی گواہی

Sep 18, 2017 01:32 PM IST | Updated on: Sep 18, 2017 03:05 PM IST

احمد آباد۔ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے قومی صدر امت شاہ نے گجرات کے مشہور نرودا پاٹیہ کی واردات کے سلسلے میں آج خصوصی عدالت کو بتایا کہ اس معاملے کی اہم ملزمہ اور ریاست کی سابق وزیر مایا کوڈنانی واردات کے دن ان کے ساتھ اسمبلی میں موجود تھیں۔ مسٹر امت شاہ نے خصوصی عدالت میں آج فریق دفاع کے گواہ کے طور پر پیش ہوکر کہا کہ پیشے سے ڈاکٹر محترمہ کوڈنانی اس وقت انہیں کی طرح رکن اسمبلی تھیں اور واردات کے دن یعنی 28 فروری کو اسمبلی میں موجود تھیں۔ اس واقعہ سے ایک دن پہلے ہونے والے گودھرا سانحہ میں مرنے والوں لوگوں کو اسمبلی میں ایک قرارداد پیش کرکے خراج عقیدت پیش کیا گيا تھا۔

مسٹر امت شاہ عدالت میں تقریبا 20 منٹ رہے اور اپنی گواہی میں انہوں نے کہا کہ وہ جب اسمبلی سے اس وقت کے اپنے اسمبلی حلقہ سركھیج میں سولا سول اسپتال گئے، تو وہاں سے نکلتے وقت انہوں نے محترمہ کوڈنانی کو دیکھا تھا۔ گودھرا سے لاشوں کو وہاں اسپتال میں لایا گیا تھا اور وہاں لوگ بہت مشتعل تھے۔ پولس نے انہیں اور محترمہ کوڈ نانی کو اپنی گاڑی میں بیٹھا کر نکالا تھا۔ تاہم ، انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ اسپتال سے نکل کر اسمبلی پہنچنے کے درمیان محترمہ کوڈنانی کہاں تھیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس کے بارے میں کچھ نہيں جانتے ہيں۔ واضح رہے کہ گجرات میں 2002 کے ریاست گیر خوفناک فسادات کے دوران یہاں نرودا پاٹیہ علاقے میں ہونے والے قتل عام میں 87 لوگوں کو ہلاک کردیا گیا تھا۔ سپریم کورٹ کی تشکیل کردہ ایس آئی آئی کی خصوصی عدالت نے 2012 میں محترمہ کوڈنانی اور بجرنگ دل کے لیڈر بابو بھائی پٹیل عرف بابو بجرنگی سمیت 30 ملزمان کو قصوروار ٹھہرایا تھا۔ محترمہ کوڈنانی کو 28 سال قید کی سزاسنائی گئی تھی۔ جولائی 2014 میں خراب صحت کی وجہ سے اور ان کی ضمانت کی ا پیل پر سماعت میں تاخیر کی وجہ سے ا نہیں ضمانت دی گئی تھی۔

نرودا پاٹیہ میں واردات کے دن ایوان اسمبلی میں تھیں مایا کوڈنانی، عدالت میں امت شاہ کی گواہی

بی جے پی صدر امت شاہ: فائل فوٹو۔

اس معاملے میں سزایافتہ سابق وزیر محترمہ مایا کوڈنانی کی عرضی پر گزشتہ 12 ستمبر کو خصوصی عدالت نے گواہی کے لئے مسٹر امت شاہ کو سمن جاری کیا تھا۔ آج عدالت میں محترمہ کوڈنانی اور دوسرے سزا یافتہ مجرم بابو بجرنگی بھی موجود تھے۔ عدالت نے تھلتیج میں واقع اپنے پتے پر مسٹر شاہ کو سمن بھیجنے کی ہدایت دی تھی ، لیکن یہ بھی کہا تھا کہ اگر وہ عدالت میں حاضر نہیں ہوئے ، تو عدالت دوبارہ سمن نہیں بھیجے گی۔ مسٹر امت شاہ آج یہاں بی جے پی کے ایک پروگرام میں شرکت کریں گے۔ جبکہ فاگویل میں بی جےپی کی مجوزہ او بی سی کانفرنس آج رد کردی گئی ہے۔ سپریم کورٹ کی ہدایات پر گجرات فسادات کے نو اہم مقدمات کی تحقیقات کے لئے قائم خصوصی تحقیقاتی ٹیم (ایس آئی ٹی) نے نرودا پاپٹیا کیس کی بھی جانچ کی تھی۔ ایس آئی ٹی کی ایک خصوصی عدالت نے 2012 میں محترمہ کوڈ نانی اور بجرنگ دل کے لیڈر بابو بجرنگی سمیت 30 ملزمان کو سزا دی تھی ۔

اس معاملے میں فیصلے کے خلاف اپنی اپیل پر سماعت کے دوران محترمہ کوڈنانی نے دعوی کیا تھا کہ واردات کے وقت وہ گجرات اسمبلی میں حاضر تھیں اور بعد میں سولا سول ا سپتال میں موجود تھیں ۔

انہوں نے دعوی کیا کہ مسٹر امت شاہ دونوں جگہوں پر اس وقت کے ایم ایل اے کے بطور ان کے ساتھ موجود تھے۔ اس لئے ان کی گواہی ان کے لئے اہم ہے۔ اس معاملے میں محترمہ کوڈنانی سمیت 80 سے زائد افراد پر الزام لگایا گیا تھا۔ ان پر حملہ آور بھیڑ کی قیادت کرنے کا الزام ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز