کانگریس نے بی جے پی مخالفین کو گجرات میں پارٹی کی طرف سے الیکشن لڑنے کی پیشکش کی

Oct 21, 2017 06:46 PM IST | Updated on: Oct 21, 2017 08:22 PM IST

احمد آباد۔  کانگریس نے گجرات میں اس سال ہونے والے اسمبلی انتخابات میں پاس لیڈر ہاردک پٹیل، او بی سی ایکتا منچ کے رہنما الپیش ٹھاكر اور دلت لیڈر جگنیش میواني سے کھلے عام حمایت طلب کرتے ہوئے انہیں انتخابات لڑنے پر حمایت یا ٹکٹ دینے کی بھی پیشکش کی ۔

پارٹی نے گجرات راجیہ سبھا انتخابات میں اس کے ساتھ مبینہ طور پر دھوكہ دہی کرنے والی نیشنلسٹ کانگریس پارٹی کے ساتھ اتحاد کے دروازے کھلے رکھنے کی بھی بات کہی۔ پارٹی کے ریاستی صدر اور سابق مرکزی وزیر بھرت سنگھ سولنکی نے آج کہا کہ وہ ہاردک، الپیش اور میواني کو کانگریس کی اس بار گجرات میں شروع ہو چکی ’وجے یاترا‘ میں شامل ہونے کے لئے دعوت دیتے ہیں۔ پارٹی الپیش اور میواني کو الیکشن لڑنے پر حمایت کرے گی اور اگرہاردک (ابھی انتخاب لڑنے کے قابل عمر نہیں) بھی مستقبل میں انتخابات لڑتے ہیں تو ان کی حمایت کی جائے گی اور پارٹی کی طرف سے الیکشن لڑنے کے لئے مدعو کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہاردک نے اب تک کانگریس کے تئیں مثبت کردار ادا کیا ہے۔ وہ ان کی اور پاٹيدار سوسائٹی کی حمایت اور آشيرواد کانگریس کے لیے چاہتے ہیں۔

کانگریس نے بی جے پی مخالفین کو گجرات میں پارٹی کی طرف سے الیکشن لڑنے کی پیشکش کی

ہاردک پٹیل، او بی سی ایکتا منچ کے رہنما الپیش ٹھاكر اور دلت لیڈر جگنیش میواني: فائل فوٹو۔

انہوں نے کہا کہ ہاردک اور الپیش کیے مطالبات درست ہیں اور پارٹی ان کی حمایت کرتی ہے۔ مسٹر سولنکی نے یہ بھی کہا کہ پارٹی راجیہ سبھا انتخابات میں کانگریس امیدوار کا ساتھ دینے والے جے ڈی یو (شرد گروپ) کے ممبر اسمبلی چھوٹو وساوا کو بھی اس کے ساتھ آنے کی دعوت دے رہے ہیں۔ مسٹر سولنکی نے دعوی کیا کہ عام آدمی پارٹی کے کئی لیڈر اور کارکن کانگریس کے رابطے میں ہیں اور جلد ہی اس میں شامل ہوں گے۔ اس دوران ہاردک نے ایک ٹویٹ کرکے کہا کہ وہ گجرات میں مغرور حکمراں پارٹی کو ہرانا چاہتے ہیں انتخابات میں لڑنا نہیں چاہتے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز