بیوٹی پارلر میں کام کرنے کی خواہش میں سعودی جانے والی حافظہ کو جسم فروشی کے دھندے میں دھکیلنے کی کوشش

Mar 22, 2017 10:39 PM IST | Updated on: Mar 22, 2017 10:39 PM IST

احمد آباد : بہترین کام اور جلد سے جلد پیسہ کما کر امیر بننے کی خواہش ہر کسی کی پوری نہیں ہوتی ۔ کچھ ایسا ہی واقعہ احمد آباد کی رہنے والی حافظہ کے ساتھ پیش آیا ۔ حافظہ ایک ایجنٹ کے ذریعہ سعودی عرب میں بیوٹی پارلر کے کام کیلئے گئی تھی ، لیکن وہاں پہنچنے کے بعد اس کو جسم فروشی کے گندے دھندے میں دھکیلنے کی کوشش کی گئی ۔ یہی نہیں جب وہ منع کرتی تھی ، تو اس کے ساتھ جم کر مار پیٹ بھی کی جاتی تھی ۔

اس معاملہ کی اطلاع حافظہ نے جب اپنے اہل خانہ کو دی، کنبہ کے ارکان نے احمد آباد خواتین کرائم برانچ میں معاملہ درج کروایا ۔ اس سلسلہ میں ایک ایجنٹ کو گرفتار کیا گیا ہے ۔ ایجنٹ نے پوچھ تاچھ میں بتایا کہ حافظہ جیسی کئی خواتین کو اسی طریقہ سے سعودی عرب بھیجا گیا ہے ۔

بیوٹی پارلر میں کام کرنے کی خواہش میں سعودی جانے والی حافظہ کو جسم فروشی کے دھندے میں دھکیلنے کی کوشش

ایجنٹ سے پوچھ گچھ کے بعد پولیس حرکت میں آگئی اور حافظہ کو ہندوستان لانے کے راستے تلاش کرنے لگی ۔ تاہم پولیس ایک لمبی لڑائی کے بعد حافظہ کو احمد آباد لانے میں کامیاب ہوئی ۔ اس سلسلے میں حافظہ نے کہا کہ سعودی پہنچنے کے بعد اسے جسم فروشی کرنے کے دھندے میں دھکیلنے کی کوشش کی گئی ۔ حافظہ کی واپسی کے بعد اس کے فیملی میں خوشی کا ماحول ہے، لیکن سوال یہ اٹھتا ہے کہ نہ جانے ایسی کتنی حافظہ آج بھی سعودی عرب میں پھنسی ہیں ۔انہیں کب وہاں سے آزاد کروایا جائے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز