حج 2017 : سیکورٹی وجوہات سے کچن کی سہولت کوسعودی حکومت نے کیا بند

Jul 17, 2017 11:29 PM IST | Updated on: Jul 17, 2017 11:29 PM IST

مالیگاؤں : مالیگاؤں شہرمیں مہاراشٹر حج کمیٹی اور حج کمیٹی آف انڈیا کی جانب سے ضلعی حج تربیتی کیمپ کے دوران مہاراشٹر حج کمیٹی کے چیئرمین ابراہیم بھائی جان نے بتایا کہ اس سال حکومت نے سبسڈی آدھے سے کم کر دی ہے۔ سعودی حکومت نے حاجیوں کی کچن کی سہولیات بند کردی ہے اور مکہ مکرمہ میں حج کمیٹی آف انڈیا کو 15000 عمارتیں رہائش کے لئے کم ملی ہیں ۔ ان سارے مسئلوں کے حل کیلئے مرکزی حکومت سے رابطہ کرکے جلد کوئی ٹھوس قدم اٹھانےکا مطالبہ کیا جارہا ہے۔

خدمات حجاج کمیٹی مالیگاؤں کی جانب سے مہاراشٹر اسٹیٹ حج کمیٹی آف انڈیا ممبئی کی جانب سے ناسک ضلع کے عازمین حج کے لئے لازمی ضلعی حج تربیتی کیمپ کا افتتاح مالیگاؤں شہر کے حج ٹریننگ سینٹر میں ہوا ۔ اس تربیتی کیمپ کے پروگرام کی صدارت مہاراشٹر اسٹیٹ حج کمیٹی کے چیئرمین ابراہیم بھائی جان نے کی۔

حج 2017 : سیکورٹی وجوہات سے کچن کی سہولت کوسعودی حکومت نے کیا بند

مہاراشٹر حج کمیٹی چیئرمین نے کہا کہ سال روں مہاراشٹر سے 11 ہزار حاجی حج کے لئے روانہ ہوں گے۔ گذشتہ سال کی بہ نسبت اس سال حکومت نے سبسڈی کم کردی ہے اور دوسری جانب سعودی حکومت نے بھی کچن کی سہولت بند کردی ہے ۔ اسی طرح مکہ میں اس سال 15000 عمارتیں حج کمیٹی آف انڈیا کو کم ملی ہیں ۔

خیال رہے کہ مرکزی حکومت کی جانب سے سپریم کورٹ کے حکم کے بعد 7 سو کروڑ کی حج سبسڈی 2016 میں 450 کروڑ کردی گئی ،جو اس سال 2017 میں 200 کروڑ کردی گئی ہے ۔ دس سال میں سبسڈی کو ختم کرنی ہے ۔ مگر اتنے بڑے پیمانے پر مرکزی حکومت کی جانب سے سبسڈی میں تخفیف کی وجہ سے حاجیوں کو پریشانی ہوسکتی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز