آبروریزی کیس : فلاہاری بابا نے بھی چلی آسارام کی چال ، کہا : میں نامرد ہوں ، مگرگرفتاری تقریبا طے

آبروریزی کیس میں چو طرفہ گھر جانے کے بعد اب راجستھان کے فلاہاری بابا نے بھی آسارام باپو والی چال چل کرخود کو بچانے کی کوشش کی ہے۔

Sep 22, 2017 06:26 PM IST | Updated on: Sep 22, 2017 06:26 PM IST

الور : آبروریزی کیس میں چو طرفہ گھر جانے کے بعد اب راجستھان کے فلاہاری بابا نے بھی آسارام باپو والی چال چل کرخود کو بچانے کی کوشش کی ہے۔ آشرم میں 21 سالہ لڑکی کی آبروریزی کے معاملہ میں پولیس کو دئے اپنے بیان میں بابا نے کہا کہ ہے وہ نامرد ہے۔ ساتھ ہی ساتھ بابا نے خود کو نامرد بتاتے ہوئے سبھی الزامات کو بھی مسترد کردیا۔

الور پولیس کو دئے بابا کے بیان کے حوالہ سے ذرائع نے بتایا ہے کہ بابا نے دعوی کیا ہے کہ وہ جڑی بوٹی کا استعمال کرکے نامرد بنا ہے۔ بابا نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ایک مرتبہ دوا لینے کے بعد اس کا اثر چھ مہینے تک رہتا ہے ۔ یعنی چھ مہینے تک وہ کسی سے سیکس نہیں کرسکتا۔

آبروریزی کیس : فلاہاری بابا نے بھی چلی آسارام کی چال ، کہا : میں نامرد ہوں ، مگرگرفتاری تقریبا طے

خیال رہے کہ چار سال پہلے اسی طرح آشرم میں نابالغ لڑکی کے جنسی استحصال کے الزام میں گرفتار کئے گئے آسارام باپو نے بھی خود کو نامرد بتایا تھا ۔ تاہم جب اس کا پوٹینسی ٹیسٹ کروایا گیا توواضح ہوگیا کہ وہ نامرد نہیں ہے۔ پولیس کو دئے بیان کے بعد اب پولیس بابا فلاہاری کے دعوی کی جانچ کیلئے اس کا بھی پوٹینسی ٹیسٹ کرواسکتی ہے۔

بابا کی گرفتاری تقریبا طے

Loading...

ادھر آبروریزی کیس کی جانچ میں مصروف پولیس کی جمعہ تک کی جانچ اور ہاتھ لگے ثبوت کی بنیاد پر بابا کا بچ نکلنا تقریبا ناممکن مانا جارہا ہے ۔ بلاسپور کی 21 سالہ لڑکی کی آبروریزی کے معاملہ کی جانچ میں پولیس کو کئی اہم سراغ اور ثبوت ہاتھ لگے ہیں ۔

بابا کے کمرے سے خواتین کے زیورات برآمد

پولیس ذرائع کے مطابق متاثرہ لڑکی نے آشرم کے جس کمرے میں آبروریزی کا الزام لگایا تھا وہاں سے خواتین کے زیورات برآمد ہوئے ہیں۔ یہ وہی کمرہ ہے جہاں بابا رہتا تھا۔ یہاں پازیب اور انگوٹھی وغیرہ زیورات ملے ہیں اور متاثرہ کے دعوی کے مطابق اس کا کچھ سامان بھی برآمد کیا گیا ہے ۔ حالانکہ اس کی سرکاری طور پر فی الحال تصدیق نہیں ہوسکی ہے۔

کیا ہے پوٹینسی ٹیسٹ ؟

پوٹینسی ٹیسٹ یعنی مردانگی کی جانچ سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ شخص نامرد ہے یا نہیں۔ ماہرین کے مطابق پوٹینسی ٹیسٹ ایسے معاملات میں کئے جاتے ہیں جب کوئی ملزم ریپ یا جنسی استحصال کے الزامات سے بچنے کیلئے خود کو نامرد بتاتا ہے۔ یہ ٹیسٹ کسی منظور شدہ یورولاجسٹ کے ذریعہ کیا جاتا ہے ۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز