اورنگ آباد میں اے ایم یو مرکز کے لئے فراہم کی جائے گی زمین: اسمبلی میں یقین دہانی

Apr 11, 2017 07:46 PM IST | Updated on: Apr 11, 2017 07:47 PM IST

اورنگ آباد۔ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی اورنگ آباد شاخ کے قیام کی راہ ہموار ہوتی نظر آرہی ہے ، مہاراشٹر اسمبلی کے بجٹ سیشن میں  اے ایم یو کے سینٹر کے  لیے زمین  الاٹمنٹ کو ہری جھنڈی دکھائی گئی ہے ۔ اس بات کی جانکاری  ایم آئی ایم  رکن اسمبلی امتیاز جلیل نے دی ۔  قانون سازاسمبلی میں یہ معاملہ ایڈوکیٹ وارث پٹھان نے اٹھایا تھا ۔ مہاراشٹر میں علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے سینٹر کے قیام کی راہ ہموار ہوتی نظر آرہی ہے ۔  مہاراشٹر قانون ساز اسمبلی میں وزیراقلیتی امور و وزیر تعلیم ونود تاوڑے نے  اے ایم یو سینٹر کے لیے زمین الاٹ کرنے کا وعدہ کیا ۔  ودیا پیٹھ بل پر بحث کے دوران ایم آئی ایم رکن اسمبلی وارث پٹھان نے یہ معاملہ اٹھایا اور خلدآباد میں زمین الاٹ کرنے کا مطالبہ کیا ۔ اس بات کی جانکاری ایم آئی ایم رکن اسمبلی امتیاز جلیل نے  دی ۔

خلد آباد کے سولی بھنجن علاقے میں تین سو بارہ ایکڑ سرکاری زمین ہے ۔ اس علاقے میں اے ایم یو کا مرکز قائم کرنے کے سلسلے میں یوپی اے دور حکومت میں زمین کا جائزہ بھی لیا گیا تھا لیکن ابتدائی پیش رفت کے بعد پچھلے چھ برسوں سے یہ معاملہ التوا کا شکار رہا۔  حالانکہ  مقامی وریاستی سطح پر اے ایم یو مرکز کے قیام کے لیے کافی کوششیں کی گئیں۔ دھرنے اور احتجاج کیے گئے ، حکومت سے نمائندگی  بھی کی گئی لیکن ان کا کوئی خاطر خواہ نتیجہ نہیں نکل پایا ۔  اب  ریاستی حکومت کی یقین دہانی سے امید کی ایک کرن جاگی ہے ۔مہاراشٹر میں  اے ایم یو سینٹر کے قیام  کے لیے جہاں کوششیں جاری ہیں وہیں جانکاروں کا کہنا ہیکہ ایک گروپ پس پردہ  اے ایم یو اورنگ آباد سینٹر کی مخالفت کر رہا ہے ۔  اے ایم یو تحریک سے وابستہ افراد کا الزام ہے کہ اورنگ آباد میں اے ایم یو سینٹر قائم ہونے کی صورت میں تعلیم مافیا کو اُنکی دکانیں بند ہونے کا خدشہ ہے۔  ایسے میں سب کا ساتھ سب کا و کاس نعرہ لگانے والی فڑنویس حکومت  اپنے وعدے پر کتنا عمل کرتی ہے  یہ   دیکھنا ہوگا۔

اورنگ آباد میں اے ایم یو مرکز کے لئے فراہم کی جائے گی زمین: اسمبلی میں یقین دہانی

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز