ہندو۔ مسلم خطرے میں نہیں بلکہ پورا ہندوستان خطرے میں ہے : غیاث الدین شیخ

May 02, 2017 12:50 PM IST | Updated on: May 02, 2017 12:50 PM IST

احمدآباد۔ آل انڈیا ملی كونسل کے گجرات یونٹ کی جانب سے احمد آباد میں مكالمہ بین المذاہب کانفرنس کا انعقاد کیا گیا ۔ اس موقع پر مختلف مذاہب کے ذمہ داران  ایک اسٹیج پر نظر آئے ۔مكالمہ بین المذاہب کانفرنس منعقد کرنے والے آل انڈیا ملی كونسل کے گجرات یونٹ صدر مفتی رضوان تاراپوری نے کہا کہ آج ہندوستان کے مسلمانوں پر بے بنیاد الزام لگا کراسلام کو بدنام کرنے کی نا کام کوشش کی جا رہی ہے ، اس لئے ہماری کوشش تھی کہ ایک اسٹیج پر بیٹھ کر تمام مذاہب کے ذمہ دارن انسانیت کے مذہب کو مضبوط بنانے کے لئے اقدامات کریں ۔ مكالمہ بین المذاہب کانفرنس میں حصہ لینے والے تمام مذہب کے ذمہ داران کو اتحاد ٹرافی دے کر ان کی عزت افزائی بھی کی گئی۔

 اس موقع پر مسلم اور ہندو مذہبی رہنما نے تبادلہ خیال کرتے ہوئے کہا کہ آج ہندوستان کے مسلمانوں اور ہندووں کے درمیان کچھ لوگ سیاسی فوائد کے لئے دوریاں پیدا کر رہے ہیں ۔ اس لئے ہم تمام لوگوں کی ذمہ داری بن جاتی ہے کہ ہم سیاسی پارٹیوں کے چنگل میں نہ پھنسیں ۔ اس موقع پرآل انڈیا ملی كونسل کے گجرات یونٹ کے صدر مفتی رضوان نے کہا کہ ہم بھلے ہی ہم دو مذہب کو ماننے والے ہوں لیکن ہم انسان بھی ہیں ۔ تو وہیں بھارتی آشرم کے مهنت بھارتی باپو نے اس پروگرام میں آنے کے بعد خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مذہب نہیں سکھاتا آپس میں بیر رکھنا ۔ پروگرام میں حصہ لینے آئے کانگریس کے ایم ایل اے غیاث الدین شیخ نے کہا کہ آج کے دورمیں ہندو اور مسلم خطرے میں نہیں بلکہ پورا ہندوستان خطرے میں ہے۔

ہندو۔ مسلم خطرے میں نہیں بلکہ پورا ہندوستان خطرے میں ہے : غیاث الدین شیخ

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز