کٹھوعہ آبروریزی کیس : ہیما مالنی نے کہا : بچی سے درندگی کرنے والے سبھی ملزموں کو پھانسی کی سزا ہو

جموں و کشمیر کے کٹھوعہ ضلع میں آٹھ سال کی بچی کی اجتماعی آبروریزی کے بعد قتل کے معاملہ کو لے پر پورا ملک شرمسار ہے ۔

Apr 15, 2018 01:45 PM IST | Updated on: Apr 15, 2018 01:48 PM IST

ممبئی : جموں و کشمیر کے کٹھوعہ ضلع میں آٹھ سال کی بچی کی اجتماعی آبروریزی کے بعد قتل کے معاملہ کو لے پر پورا ملک شرمسار ہے ۔ مرکزی وزیر مینکا گاندھی نے نابالغ سے آبروریزی کے معاملہ میں جہاں پاسکو ایکٹ میں ترمیم کا مطالبہ کیا ہے وہیں اب متھراسے بی جے پی کی ممبر پارلیمنٹ ہیما مالنی نے بھی کٹھوعہ معاملہ کے سابھی ملزموں کیلئے پھانسی کی سزا کا مطالبہ کیا ہے۔

ہیما مالنی نے ہفتہ کو ٹویٹ کرکے کٹھوعہ معاملہ پر اپنے غصہ کا اظہار کیا ۔ انہوں نے لکھا کہ کٹھوعہ میں اجتماعی آبروریزی کے بعد قتل کی گئی 8 سالہ بچی کو انصاف دلانے کیلئے میڈیا سے زبردست حمایت ملنی چاہئے۔ قومی سطح پر مظاہرہ ہونا چاہئے۔

کٹھوعہ آبروریزی کیس : ہیما مالنی نے کہا : بچی سے درندگی کرنے والے سبھی ملزموں کو پھانسی کی سزا ہو

فائل فوٹو

ہیما مالنی نے لکھا کہ ان جانوروں کے خلاف جو بچیوں اور معصوموں کو بھی نہیں چھوڑتے ہیں ، میڈیا سے زبردست حمایت کے ساتھ ساتھ قومی سطح پر احتجاج کیا جانا چاہئے۔ میں مینکا جی سے متفق ہوں کہ قصوروار ثابت ہونے پر فوری موت کی سزا دی جانی چاہئے اور سبھی ریپ  (نابالغ ) کیلئے کوئی ضمانت یا معافی نہیں ملنی چاہئے۔

خیال رہے کہ جموں و کشمیر کے کٹھوعہ ضلع میں خانہ بدوش بکروال کمیونٹی کی بیٹی گزشتہ 10 جنوری کو لاپتہ ہوگئی تھی ۔ 17 جنوری کی رات اس کی لاش جھاڑیوں سے برآمد ہوئی ۔ معصوم بچی کی کئی مرتبہ اجتماعی آبروریزی کی گئی ۔ پہلے گلا دبا کر اس کا قتل کیا گیا اور پھر بعد میں پتھر سے اس کے سر کو کچل دیا گیا۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز