آسا رام کو جیل میں فیصلہ سنانے کی عرضی پر سماعت مکمل،کورٹ نے محفوظ رکھا فیصلہ

Apr 17, 2018 01:11 PM IST | Updated on: Apr 17, 2018 01:11 PM IST

جودھپور سینٹرل جیل میں بند آسا رام کو جنسی استحصال معاملے میں فیصلہ جیل میں ہی سنائے جانے کی عرضی پر منگل کو راجستھان ہائی کورٹ نے سماعت کے بعد فیصلہ محفوظ رکھا ہے۔جسٹس گوپال کرشنا ویاس کی بنچ نے پولیس محکمہ کی عرضی پر فریقین کو سن کر فیصلہ محفوظ رکھا ہے۔اس سماعت کے دوران ڈی سی پی ایسٹ امن دیپ کپور سمیت پولیس کے اعلی افسر کورٹ میں موجود رہے۔جنسی استحصال کے اس معاملے میں ایس سی ۔ایس ٹی کورٹ پیٹھا سین افسر مدھو سدن شرما آئندہ 25 اپریل کو فیصلہ سنانے والے ہیں۔

جودھپور کمشنر نے ہائی کورٹ میں ایک عرضی دائر کر کے آسا رام کو جیل میں ہی فیصلہ سنانے کی درخواست کی تھی۔پولیس نے اپنی عرضی میں قانون نظام کا حوالہ دیتے ہوئے کورٹ کے سامنے 9 نکات رکھتے ہوئے آسا رام کے وکیل مہیش بوڑاکورٹ میں تحریری جواب پیش کریں گے۔

آسا رام کو جیل میں فیصلہ سنانے کی عرضی پر سماعت مکمل،کورٹ نے محفوظ رکھا فیصلہ

راجستھان پولیس کی جانب سے فیصلہ سنانے کے دن قانونی نظام بگڑنے کا اندیشہ جتاتے ہوئے ہائی کورٹ سے درخواست کی کہ فیصلہ جیل میں سنایا جائے۔پولیس نے کہا کہ اس دن بڑی تعداد میں آسارام کے حامی ایک ساتھ ہو سکتے ہیں۔پولیس نے پنچکولہ میں آبرو ریزی کے ملزم بابا رام ۔رحیم کو سنائی گئی سزا کے دن ہوئے تشدد کا بھی حوالہ دیا۔

فیصلےکی تاریخ کے مد نظر پولیس ابھی سے الرٹ ہو گئی ہے۔پولیس آسا رام کے آشرموں اور جودھپور آنے والے ریل مارگ و ہائی وے مارگوں پر بھی برابر نظر بنائے ہیں۔فیصلے کے دن ھامیوں کی بڑی تعداد میں جودھپور پہنچنے کی خفیہ رپورٹ ملنے کے بعد پولیس فکر میں ہے۔وہ بھونک پھنوک کر قدم رکھ رہی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز